آزادکشمیر، برفانی تودہ گرنے سے ہلاکتیں 79 ہو گئیں، متاثرہ علاقے آفت زدہ قرار

  آزادکشمیر، برفانی تودہ گرنے سے ہلاکتیں 79 ہو گئیں، متاثرہ علاقے آفت زدہ قرار

  



مظفرآباد(مانیٹرنگ ڈیسک)آزاد کشمیر میں برفانی تودہ گرنے سے جاں بحق افراد کی تعداد 79 ہو گئی، حکومت نے برفباری سے متاثرہ علاقوں کو آفت زدہ قرار دیدیا ہے۔آزاد کشمیر کی وادی نیلم، وادی گریس اور سرگن ویلی سمیت دیگر متاثرہ علاقوں میں امدادی کام جاری ہے،بالائی وادی نیلم کے علاقوں ڈھکی اورچکناڑ سے 14 زخمیوں کو مظفرآباد کے اسپتال منتقل کردیا گیا۔سرگن ویلی میں برفانی تودہ گرنے سیزخمی خاتون دم توڑگئی جس کے بعد برفانی تودہ گرنے سیجاں بحق افراد کی تعداد 79ہو گئی ہے۔وادی نیلم میں 200 سے زائدمکانات اور 22 دکانیں متاثرہوئی ہیں جب کہ 56 افراد زخمی ہیں۔79 جاں بحق افراد میں سے 40 سے زائد افراد کی تدفین کردی گئی ہے جب کہ دیگر کی تدفین کے لیے مناسب جگہ کے انتظامات کیے جا رہے ہیں۔وادی لیپہ میں شدید برف باری میں بند ہونے والی شیر گلی موجی روڈ کو کھولنے کے لیے کام جاری ہے، گذشتہ کئی دنوں سے بند روڈ سے عوام کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔ آزاد کشمیر کیوزیراعظم راجہ فاروق حیدر خان نے آزادکشمیر کے برفباری سے متاثرہ علاقوں کو آفت زدہ قرار دے دیا ہے۔ترجمان وزیر اعظم آزاد کشمیر کے مطابق حالیہ برفباری کے بعدکشمیر کے ضلع نیلم،وادی لیپہ اور ضلع حویلی کے علاقے بھیڈی کو آفت زدہ قرار دیا گیا ہے۔وزیراعظم آزادکشمیر نے کمشنر مظفرآباد کو ریلیف کمشنر مقرر کرنے کی بھی منظوری دیتے ہوئے ہدایت کی ہیکہ متاثرہ علاقوں میں امدادی کاروائیوں کی منصوبہ بندی موسمی حالات کو مدنظر رکھتے ہوئے کی جائے۔وزیراعظم آزاد کشمیر نے برفباری سیتباہ ہونیوالے مکانات کے مکینوں کو سرکاری عمارات میں رہائش کی سہولیات فراہم کرنے کی بھی ہدایت جاری کی ہیں۔

آفت زدہ قرار

مزید : صفحہ اول