میلسی‘ ڈپٹی ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر کا چھاپہ‘ اتائی کلینک چھوڑ کرفرار

  میلسی‘ ڈپٹی ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر کا چھاپہ‘ اتائی کلینک چھوڑ کرفرار

  



میلسی (سپیشل رپورٹر)ڈپٹی ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر ڈاکٹر راؤ محمد خلیل نے چھاپہ مارا تو اتائی کلینک چھوڑ کر فرار ہوگیا تفصیل کے مطابق مبینہ طور پر معلوم ہوا ہے کہ غلام مصطفیٰ 15 سال قبل ڈاکٹر خالد امین چغتائی کے ہسپتال میں جھاڑو دیتا رہا بعد ازاں اس نے ریلوے روڈ پر ڈینٹل کی دوکان بنائی اور خود کو کوالفیائیڈ ڈاکٹر ظاہر کر کے مریضوں کا علاج شروع کردیا زنگ آلود اوزاروں سے عرصہ دراز سے مریضوکا علاج کررہا تھا شہریوں نے کی گئی شکایت پر تقریباً عرصہ دو سال قبل ہیلتھ کیئر نے اس کی مبینہ جعل سازی پر مبنی(بقیہ نمبر50صفحہ12پر)

دانتوں کی دوکان کو سیل کیا تو یہ وہ دوکان چھوڑ کر غائب ہوگیا اور کہروڑ پکا روڈ پر ایک گھر کے اندر غائبانہ دوکان بنالی اور وہاں پر پریکٹس کرتا رہا جبکہ موذی امراض میں مبتلا ء مریضوں نے اس کے خفیہ اڈے کی مخبری کی تو وہاں سے سامان لپیٹ دیا اور دوبارہ سیل شدہ دوکان کو چھوڑ کر ایک غیر منظور شدہ دوکان میں جعلی ڈاکٹر بن کر دانتوں کے آپریشن شروع کردیئے اس بارے نشاندہی کی گئی تو اس نے مختلف ڈاکٹروں کے بورڈ لگا کر کارروائی سے بچنے کیلئے اپنا دھندہ جاری رکھا جب اس کی شکایت زدعام ہوئی تو محکمہ صحت کے افسران نے مکمل تحقیقات کر کے اس کا غیر قانونی ڈینٹل یونٹ سیل کردیا اس بارے ڈپٹی ڈسٹرکٹ آفیسر ہیلتھ میلسی نے بتایا مذکورہ اتائی غلام مصطفیٰ نے ڈاکٹر عمیر الطاف کا بورڈ لگا رکھا ہے جو موقع پر موجود نہ تھا بار بار رابط کرنے پر بھی وہاں نہ پہنچا لوگوں نے بتایا کہ مذکورہ ڈاکٹر ہفتے میں ایک دن آتا ھے باقی دن اتائی کام کرتا ہے اس کارروائی پر شہریوں نے اطمینان کا اظہار کیا۔

چھاپہ

مزید : ملتان صفحہ آخر