رحیم یارخان:گن پوائنٹ پرحاملہ خاتون سے بداخلاقی،3سال بعد مقدمہ درج، کارروائی شروع

رحیم یارخان:گن پوائنٹ پرحاملہ خاتون سے بداخلاقی،3سال بعد مقدمہ درج، ...

  



رحیم یار خان (نمائندہ پاکستان)گھر میں اکیلا پاکر چار مسلح ملزمان نے حاملہ خاتون کواسلحہ کی نوک پر لاکھوں روپے نقدی اور طلائی(بقیہ نمبر33صفحہ12پر)

زیورات سمیت اغواء کرلیا‘ نامعلوم مکان پر لے جاکر اجتماعی بد اخلاقی کا نشانہ بناڈالا‘فرضی طلاق اور نکاح نامہ تیارکرکے دارالامان داخل کرادیا۔ پنچائیتی فیصلہ نہ ہونے پر عدالت کے حکم پر متاثرہ کی مدعیت میں پولیس نے3سال بعد مقدمہ درج کرکے کارروائی شروع کردی۔ تفصیل کے مطابق تھانہ رکن پور کی حدود بستی پیر بخش موضع کوٹلہ حیات کی رہائشی کلثوم بی بی نے فاضل عدالت میں رٹ پٹیشن دائر کرتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ 31-12-2016ء کو شوہر سوتن کو دوا دلانے کیلئے خانپور گیا ہوا تھا کہ گھر میں اکیلا پاکر رات گئے چار مسلح ملزمان محمدعلی‘ فیض رسول‘ عارف اور محمد امتیاز دیواریں پھلانگ کر گھر میں داخل ہوگئے اور اسلحہ تان کر سنگین نتائج کی دھمکیاں دینا شروع کردی اور گھرموجود5لاکھ 50 ہزاروپے کی نقدی 11تولے طلائی زیورات سمیت اسے اغواء کرکے تحصیل خانپور نامعلوم مکان میں لے گئے‘ جہاں چاروں ملزمان فیض رسول‘ عارف‘ امتیاز اور محمدعلی نے دو ماہ کی حاملہ ہونے کے باوجود اسے جنسی بد اخلاقی کانشانہ بناتے رہے‘ اور اسے جان سے ماردینے کی دھمکی دیتے ہوئے سیفد کاغذات پر انگوٹھے لگوا کر جعلی طلاق اور فرضی نکاح نامہ تیار کروالیا اور اسے دارالامان رحیم یارخان داخل کرادیا۔ اطلاع پاکر ورثاء نے اسے دارالامان سے گھر لے آئے‘ وقوعہ بارے بتانے پر معززین علاقہ نے پنچائیت بلالی‘ پنچائیت میں گناہ تسلیم کرنے کے باوجود فیصلہ سے انکاری ہوگئے۔ عدالت کے حکم پر متاثرہ کلثوم بی بی کی مدعیت میں پولیس نے مقدمہ درج کرکے کارروائی شروع کردی ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر