مہنگائی کے سونامی نے حکومت کے کھوکھلے دعوے بے نقاب کردیئے: سراج الحق

مہنگائی کے سونامی نے حکومت کے کھوکھلے دعوے بے نقاب کردیئے: سراج الحق

  



پشاور (سٹی رپورٹر)مرکزی امیر جماعت اسلامی سنیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ تحریک انصاف کی حکومت میں سب کچھ مہنگا ہو گیا ہے اور آٹا 70روپے کلو تک پہنچ گیا مگر وزیر اعظم کہتے کہ گھبرانا نہیں ہے جبکہ مہنگائی کی وجہ سے سفید پوش لوگ بھی دو وقت کی روٹی کے مختاج ہو گئے ہے حکومت کا جہاز 15مہینوں سے رن وے پر کھڑا ہے ٹیک آف نہیں کر رہا اورحکومت کے وفاقی وزیر فواد چودھری نے خود اعتراف کیا ہے کہ حکومت نا کام ہو چکی ہے جو پچھلے 15مہینوں میں حکومت کی نا کامی کا اعتراف کا پہلا سچ ہے ملک میں مہنگائی کے سونامی نے حکومت کے کھوکھلے دعوں کو بے نقاب کیا ہے تبدیلی کی سونامی سب کچھ بہا کر لے گئی تبدیلی کا خمار ختم ہو گیا ہے جبکہ اسٹبلشمنٹ اور حکومت کا خمار بھی ختم ہو رہا ہے حکومت کوئی کام سنجیدگی سے نہیں کر رہی عام پاکستانیوں کی طرح ڈاکٹرز،صحافی اور انجنئیرز سب رو رہے ہیں جبکہ حکومت کام کرنے کے بجائے صرف اپنی مدت پوری کرنے کے چکر میں ہے تاہم عام آدمی کو سمجھ اچکی ہے کہ سونامی کیا ہے ان خیالات کا اظہار مرکازی امیر جماعت اسلامی سنیٹر سرالالحق نے پشاور پریس کلب میں "میٹ دی پریس "میں کیا اس موقع پر پشاور پریس کلب کے نومنتخب صدر سید بخارشاہ،جی ایس عمران یوسفزئی،نائب صدر شہزادہ فہد،فنانس سیکرٹری عزیز بونیری اور کثیر تعداد میں صحافی اورجماعت اسلامی کے عہدیداران موجود تھے۔امیرجماعت اسلامی سراج الحق نے پریس کلب کے نو منتخب عہدیداران کو مبارک بات دیتے ہوئے کہا کہ قیادت ایک امانت ہے چاہے وہ ملک کی ہو یا کسی داراے کی جسکو ہر ہر حال میں عوامی امنگوں کے مطابق پوری ذمہ داری سے نبھانا ہوتا ہے۔امیرجماعت اسلامی سنیٹر سراج الحق نے کہا کہ صوبہ اور مرکز میں ایک پارٹی کی حکومت ہے لیکن صوبے میں گیس و بجلی ی بحران ہے جبکہ حکومت بجائے کارخانوں کو فروخت دینے لنگر کانے قائم کر رہے ہیں اور وزیر اعظم کہتے ہیں گھبرانا نہیں ہے سکون قبر میں ملے گا جبکہ مہنگاء کی وجہ سے قبر،ڈیتھ سرٹفیکیٹ اور کفن بھی مہنگا ہوا ہے۔امیر جماعت اسلامی نے کہا کہ ایک کروڈ نوکریوں کا دعوی کرنے والی حکومت میں 8لاکھ تعلیمی یافتہ نوجوان بے روزگار ہوگئے ہے جبکہ 50لاگھر دینے والوں نے لوگوں کو گھروں سے بے گھر کیا اور 15مہینوں میں 31ہزار ارب سے قرضہ 41ہزار ارب تک پہنچ گیا جسکی وجہ سے جی ڈی پی کی شرح 3پر پہنچ گئی اور پاکستانی روپے بنگلہ دیشی ٹکہ سے بھی گر گیا جبکہ پاکستان افریقہ کے غریب ممالککے صف میں شامل ہوا ہے ۔سنیٹر سراج الحق نے مزید کہا کہ پہلے حکومتوں میں لوگ نا جائز کاموں کے لئے رشوت دیتے تھے مگر تحریک انصاف کی حکومت میں لوگ جائز کام کیلئے رشوت دیتے ہے۔امیر جماعت اسلامی نے کہاکہ ریاست مدینہ کی بات کی گئی لیکن ایک کام بھی ریاست مدینہ کا نہیں ہوا جبکہ ریاست مدینہ میں حج و عمرہ بھی مہنگا کیا گیا۔انہوں نے مزید کہا کہ پشاور میں بی ارٹی نہ بن سکی جسکی وجہ سے شہر کھنڈارات کا منظر پیش کر رہا ہے جبکہ سیکھوں کیلئے راتوں رات شہر آباد کیا گیا۔امیر جماعت اسلامی نے کہا کہ غریب عوام کی کسی کو فکر نہیں ایونوں میں موجود تینوں بڑی پارٹیاں عوام کیلئے سعچنے کے بجائے اپنے اپنے ابو بچانے میں مصروف ہے جبکہ ملک کے قرضوں میں اضافہ سے ہم ائی ایم ایف اور ورلڈ بینک کے غلام بن گئے ہے اور ائی ایم ایف سپورٹ نہیں بلکہ نچوڑ رہا ہے اس حکومت کو۔امیر جماعت اسلامی نے کہا کہ عوام کے پاس صر ف ایک چوائس ہے اور وہ ہے جماعت اسلامی کیونکہ اس وقت سب جماعتیں ایک ہے صرف جماعت اسلامی اپوزیشن کر رہا ہے۔امیر جماعت اسلامی نے کہا کہ احتساب بلا تفریق ہونا چاہئے ہم احتساب کے حق میں ہے جبکہ اسٹبلشمنٹ کیلئے بہتر ہے کہ وہ غر جانبدار رہے وہ کسی طرف اپنا وز ن ڈالتی ہے تو پھر ان پر الزام لگے گے۔سنیٹر سراج الحق نے مزید کہا کہ بھارت نے کشمیریوں کو ہر غمال بنایا ہے جسمیں تحریک انصاف حکومت بے نقاب ہو چکی ہے۔انہوں نے کہا کہ سینٹ میں مسلم لیگ ن، پیپلز پارٹی اور اور دیگر جماعتوں نے حکومت کو سپورٹ کیا،سینٹ میں دو منٹ میں 14 ممبران بگ گئے، کسی نے ان لوگوں کا احتساب نہیں کیا۔ امیر جماعت اسلامی سنیٹر سرالحق نے کہا کہ حکومت چاہتی ہے کہ جلد اسے شہادت ملے ہم چاہتے ہیں کہ حکومت مدت پوری کرے تاکہ مزید ایکسپوز ہوجائے

مزید : صفحہ اول