پاکستانیوں کا تبدیلی سے اعتبار اُٹھ گیا، تازہ سروے میں ایسا انکشاف کہ حکومت کے پیروں تلے واقعی زمین نکل جائے

پاکستانیوں کا تبدیلی سے اعتبار اُٹھ گیا، تازہ سروے میں ایسا انکشاف کہ حکومت ...
پاکستانیوں کا تبدیلی سے اعتبار اُٹھ گیا، تازہ سروے میں ایسا انکشاف کہ حکومت کے پیروں تلے واقعی زمین نکل جائے

  



اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان کی موجودہ بدتر معاشی صورتحال کے پیش نظر پاکستانی اتنی بڑی تعداد میں ملازمت کے حوالے سے عدم تحفظ کا شکار ہو چکے ہیں کہ سن کر آپ پریشان ہو جائیں گے۔ ایکسپریس ٹربیون کے مطابق آئپسوس (Ipsos)نامی بین الاقوامی مارکیٹ ریسرچ اینڈ کنسلٹنگ فرم نے پاکستان میں جاب سکیورٹی کے حوالے سے ایک سروے کیا ہے جس میں حیران کن طور پر 83فیصد پاکستانیوں نے کہا ہے کہ انہیں جان سکیورٹی کے حوالے سے شدید تحفظات لاحق ہو چکے ہیں۔

سروے میں 31فیصد لوگوں نے بتایا کہ وہ خود یا ان کا کوئی جاننے والا نوکری سے ہاتھ دھو چکے ہیں۔ فرم ہر سال نیشنل انڈیکس کے نام سے یہ سروے کرتی ہے۔ رواں سال یہ سروے گزشتہ ماہ کیا گیا جس کے نتائج اب جاری کر دیئے گئے ہیں۔ رپورٹ کے مطابق پاکستان میں ملازمت کے حوالے سے لوگوں کے عدم تحفظ کا شکار ہونے کی سب سے بڑی وجوہات افراط زر، مہنگائی، بے روزگاری اور غربت ہیں جن کی شرح میں ریکارڈ تیزی سے اضافہ ہو رہا ہے۔

سروے میں جن لوگوں سے سوالات پوچھے گئے ان میں سے اکثریت نے اس صورتحال کا ذمہ دار حکومت کی معاشی بدانتظامی کو قرار دیا۔ سروے کے نتائج میں بتایا گیا کہ پاکستانیوں کا ملکی معیشت پر اعتبار تیزی سے کم ہو رہا ہے اور بہت کم لوگوں نے کہا کہ وہ سرمایہ کاری کو تیار ہیں۔ صرف 21فیصد نے کہا کہ ملکی معیشت درست سمت میں جا رہی ہے۔ رواں سال پاکستان کا نیشنل انڈیکس پر سکور 32.8رہا جوکہ اگست 2019ءکی نسبت ایک پوائنٹ کم تھا۔ اس کے مقابلے میں بھارت کا نیشنل انڈیکس پر سکور 61.1رہا جو کہ گزشتہ سروے میں 62.9تھا۔

مزید : بزنس