آپ ترقیاں مانگ رہے ہیں مگر تعلیم کے معیار کو دیکھا ہے ،سندھ ہائیکورٹ، لیکچرارز کو ترقیاں دینے کاحکم

آپ ترقیاں مانگ رہے ہیں مگر تعلیم کے معیار کو دیکھا ہے ،سندھ ہائیکورٹ، ...
آپ ترقیاں مانگ رہے ہیں مگر تعلیم کے معیار کو دیکھا ہے ،سندھ ہائیکورٹ، لیکچرارز کو ترقیاں دینے کاحکم

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن)سندھ ہائیکورٹ نے سندھ کے لیکچرارز کو 20 دن میں ترقیاں دینے کی ہدایت کردی،عدالت نے ریمارکس دیتے ہوئے کہاکہ آپ ترقیاں مانگ رہے ہیںمگر تعلیم کے معیار کو دیکھا ہے ،سندھ کاکوئی کالج اٹھا لیں تعلیمی معیار پتہ چل جائے گا۔

نجی ٹی وی اے آر وائی نیوز کے مطابق سندھ ہائیکورٹ میں 12 ہزارسے زائد پروفیسرزاورلیکچرارزکو ترقیاں نہ دینے کے معاملے پر سماعت ہوئی،سندھ ہائیکورٹ نے لیکچرارز کو20 دن میں ترقیاں دینے کی ہدایت کردی،گریڈ17 سے 18 سے لیکچرارزکو20 دن میں اگلے گریڈ میں ترقی دینے کاحکم دیدیا۔

عدالت نے کہاکہ اگرترقیاں نہ دی گئیں توپھر فریقین کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی کریں گے ،چیف سیکرٹری اورسیکرٹری کالجز کے خلاف توہین عدالت کارروائی کریں گے 

سیکرٹری کالجز نے کہاکہ سندھ حکومت نے ترقیاں، ٹائم سکیل سے متعلق پالیسی بنا لی ہے،15 روز دیں ،17سے 18 گریڈکے پیپرورک کو مکمل کرلیں گے، 17سے 18 گریڈکے پروفیسرز اورلیکچرارزکوترقیاں دے دینگے ۔

جسٹس امجد علی سہتو نے ریمارکس دیتے ہوئے کہاکہ آپ ترقیاں مانگ رہے ہیںمگر تعلیم کے معیار کو دیکھا ہے ،پاکستان میں کالجز کے نتائج دیکھ لیں ،سندھ کاکوئی کالج اٹھا لیں تعلیمی معیار پتہ چل جائے گا،سیکرٹری کالجز نے کہاکہ ہم ترقیاں دینے کو تیار ہیں ان سے لیں پڑھائیں گے ،جسٹس امجد علی نے کہاکہ تعلیمی معیار گر چکا ہے لیکچرارز پڑھانے کو تیار نہیں ،لیکچرارز نے کہاکہ ہم تسلیم کرتے ہیں تعلیمی معیار گراہے ۔

مزید :

علاقائی -سندھ -کراچی -