تحریک انصاف 14 اگست کو غربت کے خاتمے کیلئے پالیسی کا اعلان کریگی، شاہ محمود

تحریک انصاف 14 اگست کو غربت کے خاتمے کیلئے پالیسی کا اعلان کریگی، شاہ محمود

  

اسلام آباد (آن لائن)پاکستان تحریک انصاف کے نائب صدر شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ نیٹو سپلائی کی مخالفت اس لئے کرتے ہیں کہ حکومت نے پارلیمنٹ کی سفارشات کی مخالفت کی ۔موجودہ حکومت عوام کی توقعات پر پورا نہیں اتر سکیںاس لئے اب عوام کی امیدیںتحریک انصاف کے ساتھ ہیں ،14 اگست کو ہم عوام کواپنے پروگرام سے متعلق آگاہ کریں گے ،نجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ عوام نے موجودہ حکمرانوں کو بہت موقع دیا ۔گزشتہ چار سالوں سے موجودہ حکومت نے عوام کی توقعات پوری نہیں کیں لیکن اب عوام کی امیدیں تحریک انصاف کے ساتھ ہیں ، تحریک انصاف تبدیلی لائے اور ہمارے مسائل حل کرے گی ۔انہوں نے کہا کہ ہم نے کسی سے کوئی بھی معاہدہ نہیں کیا ۔ہم تحریک انصاف کو نظریاتی جماعت بنانا چاہتے ہیں جبکہ عمر ان خان بھی متعدد مرتبہ کہہ چکے ہیں کہ ہم کبھی وراثتی سیاست نہیں کریں گے۔ ہر فیصلہ میرٹ کے مطابق ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف ان لوگوں کو ٹکٹ نہیں دے گی جن پر کرپشن کے الزاما ہوں بے شک ہم ہار جائے ان کا کہنا تھا کہ جب میں پہلی مرتبہ سیاست میں آیا تو اس وقت ضیاءالحق کا مارشل لاءتھا انہوں نے کہا کہ مجھے بہت لوگ کہتے ہیں کہ اگر میں پیپلز پارٹی میں ہوتا تو میں آج وزیر اعظم ہوتا لیکن مجھ جیسے بندے کو صدر زرداری کبھی بھی پسند نہ کرتے اور میں واضح کردوں کہ میں نے بے نظیر بھٹو کو اپنا لیڈر مانا تھا۔ صدر زرداری کو نہیں ۔اگر آج محترمہ ہوتی تو صدر زرداری نے سیاست میں دور دور تک نظر نہیں آنا تھا۔ ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ اب 47 فیصد ووٹ نوجوانوں کا ہے جبکہ 36 لوگ ایسے ہیں جو آج تک ووٹ ڈالنے نہیں گئے لیکن اب حالات سے مجبور ہو کر وہ ووٹ ڈال رہے ہیں تا کہ ملک کے حالات بہتر ہوں انہوں نے کہا کہ 14 اگست کو ہم عوام کے سامنے اپنا ایک پروگرام دیں گے جس کے تحت ہم عوام کو بلائیں گے اور اپنی پالیسیوں کے بارے میں آگاہ کریں گے کہ کس طرح ملک سے غربت ،بے روز گاری کا خاتمہ ہوگا ۔ جس دن نیٹو سپلائی بحال ہوئی اس سے اگلے ہی دن ڈرون حملہ ہوا جس میں 23 بے گناہ افراد مارے گئے ۔انہوں نے کہا کہ ہم امریکہ سے اچھے تعلقات چاہتے ہیں لیکن پاکستان کی خود مختاری ہمارے لئے سب سے اہم ہے ہم پاکستان میں امن چاہتے ہیں۔

مزید :

صفحہ آخر -