سپریم کورٹ نے حاضر سروس میجر کے بچوں کو ماں کے حوالے کر دیا

سپریم کورٹ نے حاضر سروس میجر کے بچوں کو ماں کے حوالے کر دیا

  

اسلام آباد(آن لائن) سپریم کورٹ نے حاضر سروس میجر کی جانب سے اپنے بچے غیر قانونی طور پر ماں سے چھین کر اپنے پاس رکھنے کو غلط قرار دیتے ہوئے بچے ماں کے حوالے کر دیئے۔بدھ کو چیف جسٹس افتخار محمد چودھری کی سربراہی میں قائم تین رکنی بنچ نے عظمی ٰخالد کی درخواست کی سماعت کی۔سماعت کے دوران میجر بلال سمیع ذاتی طور پر عدالت میں پیش ہوئے اور عدالت کو بتایا کہ میری بیوی عظمیٰ سے علیحدگی ہو چکی ہے اور اس کے کسی غیر مرد کے ساتھ تعلقات تھے اس بات کی معلومات بچوں کو بھی تھیںاور ان سے پہلے بچے چھین لئے گئے تھے جب میں نے بچے اپنے پاس رکھے اور بچوں کو پیار دیا تو بچے اب اپنی پہلی والدہ کے ساتھ جانے کو تیا ر نہیں،درخواست گزار نے عدالت کو بتایا کہ میرے بچوں کو مجھ سے زبر دستی چھین لیا گیا اور بچوں کے ذہنوں کو بھی میرے خلاف کر دیا گیا ہے، عدالت نے بعد میں بچوں کو ماں کے ساتھ ملا قات کر نے کی اجازت دی اور بعدمیں عدالت نے درخواست نمٹاتے ہوئے بچوں کو ماں کے حوالے کر دیا اور ہدایت دی کہ بچوں کو باپ کے ساتھ ملنے کی اجازت ہوگی ۔

مزید :

صفحہ آخر -