نیٹو سپلائی کیخلاف ملک بھر میں احتجاج جاری حکمرانوں نے ملک کو امریکی غلامی میں دھکیل دیا :حافظ سعید

نیٹو سپلائی کیخلاف ملک بھر میں احتجاج جاری حکمرانوں نے ملک کو امریکی غلامی ...

  

لاہور(پ ر)دفاع پاکستان کونسل اور جماعت الدعوة کی جانب سے نیٹو سپلائی بحالی کے خلاف احتجاج کا سلسلہ گزشتہ روز بھی جاری رہا۔راجن پور، صادق آباد، دنیا پور اور بہاولپور میں بڑے جلسوں اور کانفرنسوں کا انعقاد کیا گیا جن میں طلبائ، وکلاء، تاجروں ، سول سوسائٹی اور دیگر شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے ہزاروں افراد نے شرکت کی۔ اور امریکہ و نیٹو فورسز کے خلاف سخت نعرے بازی کرتے ہوئے اس بات کا عزم کیا گیا کہ افغان بھائیوں کے قتل عام کیلئے نیٹو سپلائی بحالی کو کسی صورت قبول نہیں کیا جائے گا ۔دفاع پاکستان کونسل کے قائدین نے اعلان کیا ہے کہ رمضان المبارک میں بھی نیٹو سپلائی بحالی کے خلاف ملک گیر تحریک کو کمزور نہیں ہونے دیا جائے گابلکہ ملک بھر کے مختلف شہروں و علاقوں میں جلسوں ، کانفرنسوں ، احتجاجی مظاہروں، ریلیوںاور سیمینارزکے انعقاد کا سلسلہ جاری رکھا جائےگا۔ جماعةالدعوة پاکستان کی طرف سے گزشتہ روزسدرہ گارڈن راجن پور میں ایک بڑی دفاع اسلام کانفرنس کا انعقاد کیا گیا جس میں امیر جماعةالدعوة پاکستان پروفیسر حافظ محمد سعید نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ نیٹو سپلائی بحال کرنا امریکہ کو خطہ میں کھل کھیلنے کے مواقع فراہم کرنے اور یہاں مزید ٹھہرنے کی سہولیات فراہم کرنے کے مترادف ہے۔پرویز مشرف کے غلط فیصلوں سے پاکستان کو بہت نقصانات اٹھانا پڑے موجودہ حکمران بھی انہی پالیسیوں پر عمل پیرا ہیںاور مشرف سے بڑی غلطیاں کر رہے ہیں۔دفاع پاکستان کونسل نیٹو سپلائی بحالی کے فیصلوں کو مسترد کرتی ہے۔ہم پورے ملک میں تحریک جاری رکھیں گے۔دفاع پاکستان کونسل اور جماعةالدعوة کے رہنماﺅں الشیخ عبداللطیف، مولانا سیف اللہ خالد، نصر جاوید، میاں محمد سہیل و دیگر نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ پاکستان کلمہ طیبہ کی بنیاد پر حاصل کیا گیا تھا لیکن ہمارے حکمرانوں نے اس ملک کو امریکی غلامی میں دھکیل دیا ۔ حکمرانوں کی بزدلانہ پالیسیوں کی وجہ سے اسلام دشمن قوتوں کو یہاں کھل کھیلنے کے مواقع مل رہے ہیں۔ ڈرون حملوں اور اس کے نتیجہ میں ہونے والے خودکش حملوں و تخریب کاری کا نقصان پاکستان کو ہو رہا ہے۔صادق آباد میں بھی ایک بڑے جلسہ عام کا انعقاد کیا گیا جس میں ہزاروں افراد نے شرکت کی اور نیٹو سپلائی بحالی کے خلاف شدید غم و غصہ کا اظہار کیا گیا۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے دفاع پاکستان کونسل کے مرکزی رہنما اور جماعةالدعوة پاکستان کے امیر پروفیسر حافظ محمد سعید نے کہاکہ18غیور پاکستانی عوام نیٹو سپلائی بحالی کا فیصلہ کسی صورت قبول نہیں کریں گے۔ رمضان المبارک میں بھی دفاع پاکستان کونسل کے پلیٹ فارم سے اسلام و پاکستان کے دفاع کی تحریک جاری رکھیں گے۔ امریکی غلامی سے نجات حاصل کئے بغیر وطن عزیز پاکستان کو درپیش مسائل حل نہیں ہوں گے۔ انہوں نے کہاکہ امریکہ و بھارت پاکستان کے ایٹمی پروگرام کے خلاف خوفناک سازشیں کر رہے ہیں۔ امریکہ ‘ بھارت سے نیو کلیئر معاہدے کر رہا ہے۔ اسے تمامتر وسائل اور ٹیکنالوجی فراہم کی جارہی ہے اور ان جماعتوں و تنظیموں کی آواز دبانے کی کوششیں کی جارہی ہیں جو اللہ کے دین کی دعوت کو دنیا میں سربلند کرنے کا بیڑہ اٹھائے ہوئے ہیں۔ جبکہ دوسری طرف پاکستان کے پرامن ایٹمی پروگرام کو اسلامی بم قرار دیکر نشانے بنانہ کی سازشیں کی جارہی ہیں۔ یہ سب کچھ محض اسلام دشمنی کی بنا پر ہے۔دشمن کے مذموم عزائم ناکام بنانے کیلئے نبی اکرم ﷺ کی سیرت و سنت پر عمل کرنے کی ضرورت ہے۔ جماعةالدعوة پاکستان کے امیر پروفیسر حافظ محمد سعید، مولانا سیف اللہ خالد، نصر جاوید، ابوہریرہ و دیگر نے صادق آباد اوردنیا پور میں نیٹو سپلائی بحالی کے خلاف منعقدہ ہزاروں افراد پر مشتمل بڑے اجتماعات سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کی جانب سے نیٹو سپلائی بحالی کا فیصلہ ملکی مفاد میں نہیں ہے امریکہ اور نیٹو کی خطہ میں موجودگی نے پاکستان کے لیے ایسے مسائل کھڑے کر دیئے ہیں جن کا ازالہ نا ممکن نظر آ رہا ہے ضرورت اس بات کی ہے کہ امریکہ اور نیٹو کو جلد از جلد افغانستان سے واپس جانے پر مجبور کیا جائے۔ انہوں نے کہاکہ نیٹو سپلائی بحال کرنے کا مقصد یہ ہے کہ امریکہ اور نیٹو کو لمبا عرصہ تک افغانستان میں رہنے اور اپنی سازشیںو مذموم منصوبے مکمل کر نے کا وقت دیا جائے ۔دفاع پاکستان کونسل نیٹو سپلائی بحالی کو کسی صورت ملکی و قومی مفادات کیلئے مناسب نہیں سمجھتی یہ فیصلہ پاکستان کے خلاف کیا گیا ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -