بیلجئیم میں شہریت کے لئے سخت قوانین کی منظوری

بیلجئیم میں شہریت کے لئے سخت قوانین کی منظوری

  

برسلز(جی این آئی )بلجیم کی پارلیمنٹ نے بیلج شہریت کے حصول کیلئے انتہائی سخت قوانین کی منظوری دے دی ہے جسکے بعد پاکستانیوں سمیت دیگر تارکین وطن کو مشکل صورتحال کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے ان نئے قوانین کے مطابق شہریت کیلئے درخواست دہندہ کو تین مقامی زبانوں فرنچ، ڈچ یا جرمن پر کافی حد تک عبور ہونا چاہئے جسے درخواست کی وصولی کے وقت ہی جانچ لیا جائیگا اس کیساتھ ہی جو شخص بلجیم پاسپورٹ حاصل کرنا چاہئے گا اسکے پاس کسی بلجین سکول یا کالج کی حاصل کردہ ڈگری یا سرٹیفکیٹ ہو یا اس نے کسی بلجین ووکیشنل ٹریننگ میں 400 گھنٹے کی ٹریننگ لی ہو یا اس نے بلجیم میں انٹیگریشن کا کورس پاس کیا ہو۔اس قانون کی ایک اور شق کے مطابق شہریت کے خواہشمند نے گذشتہ پانچ سال میں کم از کم 468 دن قانونی طور پر فل ٹائم ڈکلےئر کام کیا ہو ہاف ٹائم کام کرنیوالے اس قانون سے فائدہ حاصل نہیں کرسکیں گے جس سے زیادہ تر خواتین متاثر ہونگی اسکے علاوہ ہر درخواست دہندہ کو دو کیٹیگریز میں ڈالا جائیگا جسے سلو یا فاسٹ ٹریک کا نام دیا گیا ہے Slow پراسیس 10 سال اور فاسٹ ٹریک کے تحت 5 سال میں درخواستوں کا فیصلہ کیا جائیگا فاسٹ ٹریک میں وہ لوگ شامل کئے جائینگے جنہیں زبان پر عبور ہوگا اور انہوں نے قانونی طور پر کام بھی کیا ہوا ہوگا ایک اور اہم شرط کے مطابق ہر درخواست کیلئے فیصلہ کترے ہوئے یکساں میرٹ نہیں ہوگا وہ درخواست دہندگان جو سائنس سپورٹس یا کلچر میں بہتر کارکردگی کے حامل ہونگے یا انہوں نے بیرون ملک بلجیم کی بہتر شناخت کیلئے کام کیا ہوگا، کو دوسروں کے مقابلے میں اولیت حاصل ہوگی ۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -