انٹرنیٹ پر جرائم میں ملوث افراد نے اپریل تک عام لوگوں کے بارے میں 1.2کروڑ مختلف معلومات کی خرید و فروخت کی‘تحقیق

انٹرنیٹ پر جرائم میں ملوث افراد نے اپریل تک عام لوگوں کے بارے میں 1.2کروڑ ...

  

لندن (اے پی پی) انٹرنیٹ پر جرائم میں ملوث افراد نے جنوری سے اپریل تک کے عرصے میں عام لوگوں کے بارے میں 1.2کروڑ مختلف معلومات کی خرید و فروخت کی،یہ تعداد گزشتہ سال کے مقابلہ میں تین گنا زیادہ ہے۔ برطانوی میڈیا کے مطابق اس تحقیق کو شائع کرنے والی کمپنی ایکسپیریئن کا کہنا تھا کہ اس اضافے کی جزوی وجہ لوگوں کے انٹرنیٹ کے استعمال اور اکاو¿نٹس کی تعداد میں اضافہ بھی ہے۔ صارفین کے اوسطاً انٹرنیٹ پر 26اکاو¿نٹس ہیں مگر وہ عموماً صرف پانچ پاس ورڈ استعمال کرتے ہیں۔ کمپنی کے مطابق بہت سے لوگوں کو اپنی شناخت کے بارے میں معلومات کی چوری کا تب تک نہیں پتا چلتا جب تک ان کا کریڈٹ کارڈ چلنا رک نہ جائے یا ان کو نیا موبائل فون لینے میں دقت ہو۔ انٹرینیٹ فراڈ کے شکار افراد میں سے چودہ فیصد کو نئے قرضہ جات یا کریڈٹ کارڈ دینے سے انکار کیا گیا، نو فیصد کے نام پر غیر قانونی قرضے لیے گئے اور سات فیصد کے پیچھے قرضے وصولی کے اہلکار پڑے،اسی طرح سات فیصد کو نئے موبائل فون لینے میں دقت ہوئی۔صارفین کو تجویز دی گئی ہے کہ وہ اپنے پاس ورڈ اکثر تبدیل کیا کریں اور انہیں مشکل بنائیں تاکہ فراڈ کرنے والے ان کو آسانی سے نہ جانچ سکیں۔ تحقیق کے مطابق دو تہائی صارفین کے ایسے اکاو¿نٹس ہیں جو وہ استعمال نہیں کرتے مگر انہوں نے ان کو بند نہیں کیا۔

مزید :

عالمی منظر -