مشی گن کے شہر ڈیٹرائٹ کا دیوالیہ نکل گیا

مشی گن کے شہر ڈیٹرائٹ کا دیوالیہ نکل گیا
مشی گن کے شہر ڈیٹرائٹ کا دیوالیہ نکل گیا

  

ڈیٹرائٹ(مانیٹرنگ ڈیسک)امریکی ریاست مشی گن کےشہر ڈیٹرائٹ کے حکام نے شدید خسارے کے باعث عدالت سے شہرکو دیوالیہ قراردینے کی درخواست کی ہے۔مشی گن کے گورنر کی ہدایت پر ڈیٹرائٹ شہر کے ایمرجنسی افسر نے شہر کے دیوالیہ ہونے کی درخواست عدالت میں جمع کرادی ہے جو کسی بھی امریکی شہر کا اب تک کا سب سے بڑا دیوالیہ ہے۔ ڈیٹرائٹ نے قرض اوردیگر ادائیگیوں کی مد میں کم ازکم 18 ارب ڈالر ادا کرنے ہیں۔ درخواست میں عدالت سے استدعا کی گئی ہے یہ شہر کو دیوالیہ قرار دیا جائے،عدالت کی جانب سے درخواست کے منظور ہونے سے شہری حکومت قرضوں کی ادائیگی کے لئے اپنے اثاثے فروخت کرسکے گی، شہر کی انتظامیہ نے گذشتہ ماہ سے قرضوں کی ادائیگی بھی روک دی تھی۔ڈیٹرائٹ کے دیوالیہ ہونے کی بڑی وجوہات میں حالیہ سالوں میں شہری حکومت کی کرپشن اور بدعنوانیاں اور مقامی افراد کا بڑی تعداد میں شہر سے ہجرت کرجانا بھی شامل ہے، سال 2000 ءسے 2010 ءکے درمیان 2 لاکھ 50 ہزار افراد ڈیٹرائٹ چھوڑ کر دوسرے شہروں میں جا بسے، ڈیٹرائٹ میں جرائم میں روز بروز اضافہ ہورہا ہے اور حالیہ دنوں میں قتل کی وارداتوں میں 40 سال میں سب سے زیادہ اضافہ ہو چکا ہے جب کہ شہر کی تمام ایمبولینسز میں سے صرف ایک تہائی اس وقت شہریوں کو خدمات فراہم کر رہی ہیں۔واضح رہے کہ 2012 میں امریکی ریاست کیلی فورنیا کے شہر اسٹکا ٹن، میموتھ لیکز اور سین برنارڈینو بھی دیوالیہ ہونے کی درخواستیں دائر کر چکے ہیں۔

مزید :

بین الاقوامی -