بچہ اغوا کیس ‘ میاں ‘بیوی کو 56‘50سال قید کا حکم

  بچہ اغوا کیس ‘ میاں ‘بیوی کو 56‘50سال قید کا حکم

  



ڈیرہ غازی خان (سٹی رپورٹر) انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت کے جج شاکر حسن نے تھانہ کوٹ چھٹہ کے علاقہ سے چار سالہ بچے کو تاوان کے لئے اغواء کر نے والے دو(بقیہ نمبر17صفحہ12پر )

ملزمان میاں کو مجموعی طور پر 56سال قید اور بیوی کو 50سال قید اور ایک لاکھ روپے جرمانہ اور جائیداد ضبطی کی سزا سنا دی ،دیگر تین ملزمان بری کر دیئے اس سلسلہ میں مزید تفصیلات کے مطابق 5مئی 2018کو کوٹ چھٹہ کے علاقہ امین ٹاوَن سے پانچ ملزمان نے راوَ ساجد کے چار سالہ بیٹے عبد الحنان کو اغواء کر کے دس کروڑ تاوان کا مطالبہ کیا تھا بچے کو 41روز بعد تھانہ کوٹ چھٹہ پولیس نے چھا پہ مار کر بازیاب کرایا اور ملزمان کے خلاف مقدمہ نمبر 283;47;18درج کر کے چالان انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت میں جمع کرایا جس کی سماعت میں ملک زاہد حسین ڈپٹی پراسیکیوٹر جنرل نے عدالت کی معاونت کی سماعت مکمل ہو نے اور جرم ثابت ہو نے پر انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت کے جج شاکر حسن نے ملزم فیض عربی کو مجموعی طور پر 56سال قید ،ایک لاکھ روپے جرمانہ اور تمام منقولہ و غیر منقولہ جائیداد کی ضبطی کی سزا سنادی جبکہ اس کی شریک ملزم بیوی نگہت کو 50سال قید کی سزا سنا کر جیل بھجوا دیا مقدمہ میں دیگر تین ملزمان یاسر ،عطاء اللہ اور مقصود جاوید کو شک کا فائدہ دے کر بری کر دیا گیا دریں اثناء انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت کے جج شاکر حسن نے فورتھ شیڈول کی خلاف ورزی پر تھانہ لیہ کے ملزم سلیم انصاری کو دس ہزار جرمانہ کی سزا سنائی اسی طرح تھانہ سول لائن مظفر گڑھ کے ملزم عبد العلیم کو دس ہزار جرمانہ جبکہ تھانہ کوٹ چھٹہ کے ملزم منیر احمد کو ممنوعہ لٹریچر تقسیم کر نے پر دس ہزار جرمانہ کی سزا سنائی ۔

تاوان

مزید : ملتان صفحہ آخر