قبائلی اضلاع انتخابات،285امیدوار آمنے سامنے،عوام میں بھرپور جوش خروش

قبائلی اضلاع انتخابات،285امیدوار آمنے سامنے،عوام میں بھرپور جوش خروش

  



پشاور(این این آئی)خیبر پختونخوا کے ضم شدہ اضلاع میں تاریخ میں پہلی بارکل 20 جولائی کو صوبائی الیکشن کا انعقاد کیا جا رہا ہے جس میں انتہائی گرماگرمی نظر آرہی ہے تمام سیاسی جماعتوں نے الیکشن مہم بھر پور حصہ لیا جبکہ آزاد امیدواروں نے بھی الیکشن مہم میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیا۔ امیدواروں کیساتھ ساتھ عوام میں بھی جوش وخروش نظر آتا ہے،اپنی نوعیت کی پہلی الیکشن میں کل 285 امیدواروں میں سے 202 امیدوار آزاد حیثیت سے انتخابات لڑینگے تاہم ان میں سے کئی امیدوار وں نے اپنی پارٹیاں چھوڑ کر آزاد انتخابات لڑنے کو ترجیح دی ہے،ضم شدہ اضلاع کے صوبائی انتخابات میں 285امیدوارں کے مابین 16صوبائی اسمبلی کی سیٹوں پر کانٹے دار مقابلے کی توقع کی جا رہی ہے۔کل 28 لاکھ ایک ہزار 837رجسٹرڈ ووٹرحق راہی دہی استعمال کر سکیں گے۔ 16 لاکھ 71 ہزار308 مرد جبکہ11لاکھ 30 ہزار529 خواتین شامل ہیں الیکشن کمیشن کے مطابق 1897 پولنگ اسٹیشن جس میں 482 مردوں اور 376 خواتین کیلئے مختص جبکہ 1039پو لنگ اسٹیشن مخلوط ہوں گے۔484 پولنگ اسٹیشن حساس، 455 کو انتہائی حساس قرار دیا گیاہے۔اسی طرح ضلع باجوڑ کے حلقہ پی کے 100 میں 10،101میں 15 جبکہ 102میں 12 امیدوار آمنے سامنے ہے،ضلع مہمند میں دو حلقے ہے، 103 میں 14 امیدوار اور 104 میں 18 امیدواروں کے مابین مقابلہ ہوگا،ضلع خیبر کے تینوں حلقوں 105.106.107 میں باترتیب 20,19,14امیدورں کے درمیان مقابلہ ہوگا،اسی طرح 108 اور 109ضلع کرم میں آتے ہیں جس میں 31 اور 22امیدوار اپنی قسمت آزما ئیں گے۔اورکزئی کے 110 حلقے میں 24 امیدوار کے درمیان مقابلہ ہوگا۔ حلقہ پی کے111اور پی کے 112 شمالی وزیرستان میں آتے ہیں جس میں 18,19 امیدوار الیکشن لڑنے کیلئے میدان میں اترے ہیں،جنوبی وزیراستان کے حلقہ 113 میں 19 جبکہ 114 میں 20امیدوار ہیں۔

قبائلی انتخابات

مزید : صفحہ آخر


loading...