سمارٹ کارڈز کمپیوٹرائزڈ نمبر پلیٹس جاری نہ ہونے سے 5لاکھ گاڑی مالکان رُل گئے

  سمارٹ کارڈز کمپیوٹرائزڈ نمبر پلیٹس جاری نہ ہونے سے 5لاکھ گاڑی مالکان رُل ...

  



لاہور(ارشدمحمود گھمن/سپیشل رپورٹر)ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن موٹر رجسٹریشن ریجن سی لاہور 6ماہ سے 5لاکھ گاڑیوں کے مالکان کوسمارٹ کارڈ اورکمپیوٹرائزڈ نمبر پلیٹس جاری کرنے میں ناکام ہوگئے،متاثرین گاڑی مالکان سے مذکورہ محکمہ نے نمبرپلیٹس اور سمارٹ کارڈ کی مد میں کل8کروڑ65لاکھ روپے وصول کررکھے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن موٹر رجسٹریشن ریجن سی لاہور کے چاروں زون فرید کورٹ ہاؤس، علی کمپلیکس، فیصل ٹاؤن وغیرہ شامل ہیں،جس پر سابق حکومت نے کمپیوٹرائزڈ نمبر پلیٹس اور سمارٹ کارڈ کے اجراء کے لئے قومی خزانہ سے کروڑوں روپے خرچ کئے، بعدازاں موجودہ حکومت نے باقاعدہ طور پر نیورجسٹریشن کاخاتمہ کرکے سمارٹ کارڈ کااجراء شروع کردیا لیکن ایک دو ماہ گزرنے کے بعد سیکرٹری ایکسائز اور ڈی جی ایکسائز کی ناقص حکمت عملی کے باعث گزشتہ 6ماہ کے دوران نیورجسٹریشن گاڑیوں کے مالکان کمپیوٹرائزڈ نمبر پلیٹس اور سمارٹ کارڈ حاصل کرنے کے لئے دفاتر کے چکر لگالگاکرخوارہورہے ہیں،یادرہے کہ مذکورہ محکمہ نے گزشتہ 6ماہ کے دوران 5لاکھ گاڑیوں کے مالکان سے کمپیوٹرائزڈ نمبرپلیٹس کی مد میں 6کروڑ روپے جبکہ سمارٹ کارڈ کی مد میں 2کروڑ 65لاکھ روپے ایڈوانس وصول کررکھے ہیں،مگر مذکورہ گاڑی مالکان کو سمارٹ کارڈاور نمبر پلیٹس جاری کرنے میں بری طرح ناکام ہوچکے ہیں،مذکورہ محکمہ کے افسران آئے روز ہزاروں سائلین جوسمارٹ کارڈ اور نمبر پلیٹس حاصل کرنے کے لئے آتے ہیں،انہیں مختلف  حیلوں بہانوں سے نئی تاریخ دے دیتے ہیں،متاثرین احمد علی، ثاقب بٹ، مدثر،محمد علی،شہباز،زرینہ بی بی،کلثوم فاطمہ،کشور بی بی،مدثر اقبال،اصغر علی،افضال احمد وغیرہ نے نمائندہ پاکستان کو بتایا کہ وہ سمارٹ کارڈ اور نمبر پلیٹس کے حصول کے لئے کئی مہینوں سے دھکے کھارہے ہیں لیکن کوئی شنوائی نہیں ہوتی اور آئے روز نیا بہانہ بنا کر انہیں آئندہ تاریخ دے دی جاتی ہے جس کے بعد بھی انہیں یہاں آنے پر ناکامی کا سامنا کرنا پڑرہا ہے،انہوں نے مزید بتایا کہ گاڑی کے کاغذات پاس نہ ہونے کی وجہ سے آئے روز پولیس اہلکار تنگ کرتے ہیں اور مٹھی گرم ہونے پر جان چھوڑتے ہیں،انہوں نے کہا کہ ایک تو ہم نے حکومت کو رقم بھی ادا کردی ہے اور اوپر سے روزانہ پولیس والوں کی بھی مٹھی گرم کرنی پڑتی ہے،ہمیں کس بات کی سزا دی جارہی ہے، متاثرین نے مزید کہا کہ نیا پاکستان بنانے کے خواب کو کیا اس طریقہ سے پورا کیا جارہاہے کہ عوام کر ذلیل وخوار کیا جائے،اس سے تو پرانا پاکستان اچھا تھا۔متاثرین نے وزیراعظم پاکستان اوروزیراعلیٰ پنجاب سے مطالبہ کیاہے کہ جلد ازجلداس مسئلہ کو حل کرکے عوام کو ریلیف دیا جائے۔اس حوالے سے ڈائریکٹر ایکسائز ریجن سی عمران اسلم کا کہناہے کہ سمارٹ کارڈ اور کمپیوٹرائزڈ نمبر پلیٹس کی پرنٹنگ کے حوالے سے معاملہ عدالت میں زیر سماعت ہے جس کی وجہ سے تاخیر کا سامنا ہے تاہم جلد ہی اس مسئلے پر قابو پا لیا جائے گا۔

ایکسائز

مزید : صفحہ آخر


loading...