کراچی میں نرسز کے احتجاج پر پولیس کا کریک ڈاؤن،متعدد گرفتار

کراچی میں نرسز کے احتجاج پر پولیس کا کریک ڈاؤن،متعدد گرفتار

  



کراچی (سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) مطالبات کے حق میں احتجاج کرنیوالی سندھ بھر کی نرسوں کے وزیراعلیٰ ہاوس کی طرف مارچ پر پولیس نے دھاوا بول دیا اور متعدد نرسوں کو گرفتار کرلیا۔ تفصیلات کے مطابق سندھ بھر کی نرسوں نے اپنے مطالبات کے حق میں پریس کلب سے احتجاجا وزیراعلیٰ ہاوس کی طرف مارچ کرنے کا اعلان کیا تھا جس کے بعد پولیس نے وزیراعلیٰ ہاوس جانیوالے راستے پر رکاوٹیں لگادیں۔نرسوں نے وزیراعلیٰ ہاوس جانے کی کوشش کی تو پولیس نے مظاہرین کو پی آئی ڈی سی ٹریفک پولیس چوکی کے سامنے روک دیا، مظاہرین کے آگے جانے کی کوشش پر پولیس اور مظاہرین کے درمیان جھڑپ ہوئی جس کے بعد پولیس نے مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے واٹر کینن کا استعمال کیا اور متعدد مظاہرین کو بھی حراست میں لے کر تھانے منتقل کردیا۔نرسوں کے احتجاج کے باعث پی آئی ڈی سی جانیوالے راستے کو بھی بند کردیا گیا ہے جبکہ ٹریفک کو ایم آر کیانی روڈ اور سلطان آباد کی طرف موڑا گیا۔ٹریفک جام کے باعث پی آئی ڈی سی سے شاہین کمپلیکس تک ٹریفک کی لمبی قطاریں لگ گئیں جس میں سکول کی گاڑیاں بھی پھنس گئیں، پولیس نے شاہین کمپلیکس سے ضیاء الد ین روڈ ٹریفک کیلئے بند کردیا ہے، صورتحال پر قابو پانے کیلئے رینجرز کی بھاری نفری بھی موقع پر پہنچ گئی۔

کراچی نرسز

کراچی (سٹاف رپورٹر) وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کراچی میں نرسز کے احتجاج کا نوٹس لے لیا، جمعرات کو ترجمان وزیر اعلی سندھ  نے بتا یا جب سیکریٹری صحت سے تمام معاملات طے ہوگئے تھے تو اب احتجاج کا جواز نہیں بنتا تھا، وزیراعلی سندھ سید مراد علی شاہ نے ڈی آئی جی ساوتھ کو گرفتار نرسز کو رہا کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے مزید کہا ایک سیاسی جماعت نرسز کے معاملات کو سیاسی رنگ دینا چاہتی ہے جو افسوسناک عمل ہے، اس کے علاوہ انہوں نے سیکریٹری صحت کو نرسز کے مسائل فوری حل کرنے کی ہدایت بھی کردی ہے۔

وزیر اعلیٰ سندھ نوٹس

مزید : صفحہ آخر


loading...