خادم حسین رضوی کی ضمانت منسوخی کیلئے حکومتی اپیل پر نوٹس جاری

خادم حسین رضوی کی ضمانت منسوخی کیلئے حکومتی اپیل پر نوٹس جاری

  



لاہور(نامہ نگارخصوصی)سپریم کورٹ نے تحریک لبیک کے سربراہ خادم حسین رضوی کی ضمانت منسوخی کے لئے حکومتی اپیل پر نوٹس جاری کر دیئے ہیں، سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں مسٹرجسٹس منظور ملک کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے خادم حسین رضوی کی ضمانت منسوخی کی اپیل پر سماعت ہوئی،پنجاب حکومت نے لاہور ہائیکورٹ کے خادم حسین رضوی کو ضمانت پر رہا کرنے کا فیصلہ سپریم کورٹ میں چیلنج کیاہے،سماعت کے دوران درست معاونت نہ کرنے پر سپریم کورٹ کے جسٹس منظور احمد ملک نے ایڈیشنل پراسیکیوٹر جنرل مظہر شیر اعوان پربرہمی کا اظہار کیا. فاضل جج کے استفسار پر سرکاری وکیل نے بتایا کہ خادم حسین رضوی نے عدلیہ مخالف تقاریر کیں اور عوام کو اکسایا فاضل جج نے باور کرایا کہ یہ کیس کے حالات وواقعات ہیں،قانون کی بات کریں اور بتائیں ہائیکورٹ کے خادم حسین رضوی کو ضمانت پر رہائی کے فیصلے میں کیا غلطی ہے؟جسٹس منظور ملک نے افسوس کا اظہار کیا کہ سرکاری وکیل کو کیس کے میرٹس کا نہیں پتا۔

،اس اپیل کو کس نے ڈرافٹ کیا ہے۔جسٹس منظور ملک نے استفسار کیا کہ کتنے لوگوں کی ضمانت منسوخ کرانا چاہتے ہیں؟سرکاری وکیل نے جواب دیا کہ خادم حسین رضوی اور عطا محمد دو ملزم کی ضمانت منسوخی کی اپیل دائر کی ہے،فاضل جج نے سوال کیا کہ کیس کی فائل پڑھی بھی ہے یا نہیں؟ عطا محمد اس کیس کا مدعی ہے،آپ اس کوملزم کہہ رہے ہیں تاہم عدالت نے درخواست پر نوٹس جاری کرتے ہوئے خادم حسین رضوی سے جواب طلب کر لیا۔

مزید : علاقائی