قانون کی حکمرانی یقینی بنانا حکومت کا فرض، لٹیروں کی صفو ں میں بوکھلاہٹ، افراتفری ہے: فردوس عاشق اعوان

  قانون کی حکمرانی یقینی بنانا حکومت کا فرض، لٹیروں کی صفو ں میں بوکھلاہٹ، ...

  



لاہور،اسلام آباد (جنرل رپورٹر،سٹاف رپورٹر،مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں)وزیر اعظم کی معاون خصوصی اطلاعات ونشریات فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے مسلم لیگ ن کے رہنما اور سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کی تویہ خواہش تھی کہ انہیں گرفتار کیا جائے،قانون کی عملداری جیسے جیسے رنگ پکڑتی ہے ان کے چہروں کے رنگ زرد پڑنے لگتے ہیں،شہباز شریف کے چہرے کا زرد رنگ بھی یہ ثابت کر رہا تھا قانون اپنا کام کررہا ہے، ایک سبق سب کو سیکھ لینا چاہیے کہ یہاں اصل حکمران پروردگار ہے،باقی سب افراد ہیں جنہوں نے آنا اور چلے جانا ہے،لیکن جنہوں نے خدا کی دھرتی پر خدا بن کر اس کی مخلوق کا استحصال کیا انہیں اپنی آبیتی قوم کو سنانا پڑی،وہ گزشتہ روز ایوان وزیر اعلیٰ لاہور میں پریس کانفرنس سے خطاب کر رہی تھیں،وزیر اعظم کی معاون خصوصی اطلاعات و نشریات کا مزید کہنا تھا سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کی گرفتاری پر مسلم لیگ ن کی قیادت کا حکومت پر الزام تراشیاں کرنا اور وزیر اعظم عمران خان کو اس عمل میں گھسیٹنا یہ ظاہر کرتا ہے کہ مسلم لیگ ن قیادت وزیر اعظم عمران خان سے ذاتی عداوت، حسد اور بغض رکھتی ہے۔انکا کہناتھا جس جس کی داڑھی میں تنکا ہے اس کو ضمیر کی عدالت میں پریشانی اور اضطراب کا سامنا ہے اور ضمیر کے قیدی کو میڈیا میں آکر وضاحتیں دینے کی ضرورت پڑ رہی ہے۔ایسے عناصر کو میرا مشورہ ہے کہ وہ انگلیاں اٹھا اٹھا کر وضاحتیں دینے کے بجائے عدالتوں میں اپنی بے گناہی کے ثبوت فراہم کریں،تاکہ عوام کی عدالت میں بھی حقیقی معنوں میں سرخرو ہو سکیں، قانون کی حکمرانی یقینی بنانا حکومت کا فرض، قانون کے مطابق ہی ملک چل اور آگے بڑھ سکتا ہے،فردوس عاشق اعوان کا مزید کہنا تھا سابق وزیر اعظم کو کن الزامات پر گرفتار کیا گیا وہ نیب ہی بتا سکتی ہے، شاہد خاقان کو مسلسل نیب دفتر بلایا گیا لیکن وہ پیش نہیں ہوئے، ان کی گرفتاری کی اطلاعات میڈیا کے ذریعے ملی ہیں، نیب کے پاس وارنٹ ہوگا اسی لیے انہوں نے گرفتا ر کیا۔ملک میں ادارے آزاد ہیں ان پر کسی قسم کا دبا ؤنہیں، ادارے با اختیار انداز سے کام کریں گے تو رول آف لا ہوگا۔ وزیر اعظم عمران خان نے اداروں کو طاقتور بنایا ہے، جو بھی جرم کرے گا قانون کی گرفت میں آئے گا، قانون کی نظر میں طاقتور اور کمزور سب برابر ہیں، یہ نیا پاکستان ہے اور یہاں اب ادارے خواہشات نہیں قانون کے تابع ہیں۔ حکومت میں کسی نے اختیارات کا غلط استعمال یاکرپشن کی ہو تو ضر و ر گرفتار ی ہونی چاہیے۔ قبل ازیں سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے پیغام میں معاون خصوصی کا کہنا تھا و ز یراعظم عمران خان قانون کی حکمرانی یقینی بناکر قوم سے کیا وعدہ نبھا رہے ہیں، قانون پر عملداری رنگ دکھا رہی ہے، چوروں کے سو دنوں کے بعد شاہ کا ایک دن آپہنچا، مال مسروقہ کی برآمدگی کی ایک اور قسط قوم کو مبا ر ک، لوٹے مال کی واپسی کا خواب حقیقت بن رہا ہے۔ پہلی بار ایساہونے جا رہا ہے کہ لوٹا مال واپس ہو رہا ہے، لٹیروں کی صفوں میں بوکھلا ہٹ اور افراتفری ہے، شاہی خاندان کے گھر،اہل خانہ کے نام پرجائیداد ضبطی واپسی کے خواب کی تعبیر ہے۔ تمام مجرم ایک ہی صف میں کھڑے ہوگئے ہیں۔

فردوس عاشق 

مزید : صفحہ اول


loading...