متحدہ اپوزیشن کے مزارقائد کے سامنے جلسہ انتظامات کوحتمی شکل دے دی گئی

  متحدہ اپوزیشن کے مزارقائد کے سامنے جلسہ انتظامات کوحتمی شکل دے دی گئی

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر)متحدہ اپوزیشن کے ملک گیریوم سیاہ کے سلسلہ میں 25جولائی کوکراچی میں سیاسی طاقت کے مظاہرے کے لیے مزارقائد کے سامنے جلسہ انتظامات کوحتمی شکل دے دی گئی،مزارقائد کے برابرپیپلزسیکریٹریٹ کے سامنے اسٹیج کی جگہ کا تعین کرلیا گیا،جلسہ میں شرکت کے لیے مختلف اپوزیشن. جماعتوں کے قائدین ریلیوں اور جلوسوں کی قیادت کرتے ہوئے جلسہ گاہ پہنچ کر خطاب کریں گے۔ پیپلزپارٹی کے رہنماں سعید غنی وقار مہدی کا کہنا ہے کہ 25 جولائی کا جلسہ سیلیکٹڈ حکو مت کے خلاف ریفرنڈم ہوگا سندھ کے عوام سیلیکٹڈ وزیراعظم اور حکومت کو مسترد کردیں گے. 25 جولائی کوعام انتخابات کوایک برس مکمل ہونے پرمتحدہ اپوزیشن جماعتوں کی اپیل پر انتخابی دھاندلی اور سلیکٹڈ حکومت کے انتخاب کے خلاف ملک گیریوم سیاہ کے سلسلہ میں کراچی میں متحدہ اپوزیشن سیاسی طاقت کا مظاہرہ کرے گی۔ اپوزیشن جماعتوں کے اتحاد میں شامل پیپلزپارٹی سندھ کے سیکریٹری جنرل وقارمہدی،پیپلزپارٹی کراچی کے صدرسعید غنی اور دیگر جماعتوں کے صوبائی رہنماں نے جمعرات کومجوزہ جلسہ گاہ کا دورہ کیا اورجلسہ کی تیاریوں کے لیے آرگنائزنگ کمیٹی کے فیصلوں کوحتمی شکل دی۔ قبل ازیں اپوزیشن جماعتوں کی آرگنائزنگ کمیٹی کا اجلاس پیپلزسیکریٹریٹ میں منعقد ہوا جس میں جلسہ کی کامیابی کے لیے کراچی کے چھ اضلاع سے ریلیاں اورجلوس نکالنے کی حکمت عملی طے کی گئی۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ مزارقائد جلسہ میں شرکت کے لیے تمام سیاسی جماعتیں اپنی اپنی ریلیاں اورجلوس کی شکل میں جلسہ گاہ پہنچیں گے۔ علاوہ ازیں اپوزیشن جماعتوں کے رہنماں نے پیپلز سیکریٹریٹ کے سامنے جلسہ گاہ کی تیاری اوراسٹیج کے مقام کا دورہ کیا اور جلسے کی تشہیری مہم کے لیے فیصلے کیے گئے مزار قائداعظم پر اپوزیشن جماعتوں کے ہونے والے جلسہ عام کے سلسلے میں قائم کی گئی آرگنائزنگ کمیٹی کے اجلاس میں پیپلز پارٹی کے سعید غنی اور وقار مہدی، مسلم لیگ ن کے علی اکبر گجر، سلمان خان، جمعیت علمائے اسلام ف کے مولانا عبدالکریم عابد اور مولانا غیاث،اے این پی کے یونس بونیری اور حنیف شاہ، نیشنل پارٹی کے رمضان میمن اور مجید ساجدی، جے یو پی کے حلیم غوری، اسلم عباسی، پختونخواہ ملی عوامی پارٹی کے سکندر خان اور بشیر خان مندوخیل نے شرکت کی۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ اسٹیج کی تیاری کا کام منگل سے شروع کر دیا جائے گا پورے شہر میں بینرز اور پوسٹر آویزاں کئے جائینگے اور استقبالیہ کیمپ لگائے جائینگے۔ جلسہ کے حوالے سے عوامی رابطہ مہم ہینڈ بلز اور موبائل پبلیسٹی بھی کی جائے گی۔ تمام جماعتیں اپنی اپنی رابطہ عوامی مہم چلائیں گی۔ اجلاس میں مختلف کمیٹیاں تشکیل دی گئیں اجلاس میں سیلکٹیڈ حکومت کی ناقص پالیسیوں اور عوام دشمن رویہ کیخلاف بھرپور عوامی مہم چلانے کا بہی فیصلہ کیا گیا اور اس عزم کا اظہار بہی کہ اپوزیشن جماعتیں 25 جولائی 2019 جمعرات کو مزار قائد پر بھرپور عوامی طاقت کا مظاہرہ کریں گی۔ پیپلزپارٹی کراچی کے صدر سعید غنی سیکریٹری جنرل جاوید ناگواری آصف خان ذوالفقار قائم خانی سردار خان مرزا مقبول نے جلسہ گاہ کے دورے کے مقام پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تہا کہ سلیکٹڈ وزیراعظم اور سلیکٹڈ حکومت کے تجربے نے معیشت اور معاشرتی اقدار کو کچلنے کے ساتھ ساتھ اداروں کے وقار کو بھی ناقابلِ تلافی حد تک نقصان پہنچایا ہے، جس کے ازالہ کٹھ پتلی حکمرانوں کو بنی گالہ واپس بھیجنے کے علاوہ اور کچھ نہیں۔ انہوں نے کہا کہ عوام نے دھاندھلی زدہ بجٹ کو مکمل طور رد کردیا ہے، کیونکہ اس طرح کی منفی پالیسیوں کے نتائج بعدازاں قوم کو ہی بھگتنا پڑیں گے، جو کسی بھیانک تصور سے بھی زیادہ خوفناک ہوں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ تحریک انصاف کے دس ماہ پر محیط دورِ بدانتظامی کے دوران قومی اثاثے گھٹ کر آدھے ہو گئے ہیں، جبکہ غربت اور معاشی بے یقینی نئی بلندیوں کو چھو رہی ہیں۔

مزید : صفحہ اول


loading...