شجر کاری سے ہی ماحولیاتی تبدیلی سے محفوظ رہا جا سکتا ہے، چیف سیکریٹری سندھ

شجر کاری سے ہی ماحولیاتی تبدیلی سے محفوظ رہا جا سکتا ہے، چیف سیکریٹری سندھ

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر) چیف سیکریٹری سندھ سید ممتاز علی شاہ نے کہا ہے کہ شجر کاری سے ہی ماحولیاتی تبدیلی سے محفوظ رہا جا سکتا ہے۔ یہ بات انہوں نے جمعرات کو سرسبز سندھ شجرکاری مہم کے حوالے سے منعقد ایک تقریب میں کی۔ تقریب میں چیئرپرسن پلاننگ ناہید شاہ درانی، سینیئر ممبر بورڈ آف ریونیو شمس الدین سومرو، سیکریٹری اسکول قاضی شاہد پرویز، سیکریٹری جنگلات عبد الوہاب سومرو، سیکریٹری لیبر عبد الرشید سولنگی، سیکریٹری اطلاعات اختر حسین بگٹی سمیت دیگر صوبائی سیکریٹریز، ڈی آئی جی ساؤتھ شرجیل کھرل، ڈپٹی کمشنر ساؤتھ سمیت اسکول طلبہ کی بڑی تعداد نے نیشنل میوزیم میں پودے لگائے۔ تقریب میں چیف سیکریٹری سندھ سید ممتاز علی شاہ نے کہا کہ سر سبز سندھ کے تحت شجر کاری مہم کا باقاعدہ آغاز وزیر اعلیٰ سندھ نے کیا ہے اور آج کی یہ تقریب بھی اسی مہم کا حصہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ بدلتے ماحول کے ساتھ پودوں کی اہمیت اب سندھ میں خاص طور پر کراچی میں بڑھ گئی ہے اور یہ وقت کی ضرورت ہے کہ زیادہ سے زیادہ پودے لگائیں جائیں۔ انہوں نے کہا کہ سر سبز سندھ ایک کامیاب شجر کاری مہم ثابت ہوگی کیونکہ اس میں حکومت کا ہر شعبہ بڑھ چڑھ کر حصہ لے رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت کے تعاون سے محکمہ جنگلات سندھ گرین پاکستان کے تحت سر سبز سندھ میں 1 بلین پودے لگائے جارہے ہیں۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ کراچی میں پانی کی کمی ہے اور کے 4 کے کامیاب منصوبے کے بعد کراچی میں پانی کی کمی کا خاتمہ ہوجائے گا۔ انہوں نے کہا کہ غیر قانونی واٹر ہائیڈرنٹس کے خلاف سندھ حکومت نے سخت ایکشن لیا ہے اور شہر میں اس وقت صرف واٹر بورڈ کے واٹر ہائیڈرنٹس چل رہے ہیں انہوں نے میڈیا نمائندگان سے کہا کہ وہ غیر قانونی واٹر ہائیڈرنٹس کی شناخت کریں حکومت ایکشن لے گی۔ انہوں نے کہا کہ حب ڈیم میں وافر مقدار میں پانی آگیا ہے جس سے کراچی کو پانی کی سپلائی میں بہتری آئی گی۔چیف سیکریٹری سندھ سید ممتاز علی شاہ نے کہا کہ سول سوسائٹی، میڈیا نمائندگان اور تعلیمی ادارے بھی شجر کاری مہم میں حکومت کا ساتھ دیں اور بڑھ چڑھ کر حصہ لیں کہ مون سون کا موسم شجر کاری کے لئے موثر ہے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر


loading...