اسپتالوں پر سیلز ٹیکس کا نفاذ ظلم کی انتہاء ہے، مشیر اطلاعات و قانون

  اسپتالوں پر سیلز ٹیکس کا نفاذ ظلم کی انتہاء ہے، مشیر اطلاعات و قانون

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر)وفاقی حکومت کی جانب سے ہسپتالوں پر سیلز ٹیکس کے نفاذ پر مشیر اطلاعات قانون و اینٹی کرپشن سندھ بیرسٹر مرتضیٰ وہاب نے کہا ہے کہ تحریک انصاف کی نااہل حکومت نے صحت کے شعبہ کو بھی کمائی کا ذریعہ بنالیا ہے۔ایف بی آر کی جانب سے ہسپتالوں کو سیلز ٹیکس کا نوٹس دینا ظلم ہے۔ بیرسٹر مرتضیٰ وہاب نے کہا کہ اب ہسپتال بھی سیلز ٹیکس کی زد میں آچکے ہیں۔ بجلی اور گیس کمپنیوں کو ہسپتالوں سے اسٹینڈرڈ سیلز ٹیکس وصولی کا حکم ملا ہے۔ ملک میں صحت کی سہولیات ویسے بھی دگر گوں ہیں اس پر سیلز ٹیکس کا نفاذ زیادتی کے مترادف ہے۔ بیرسٹر مرتضیٰ وہاب کا کہنا تھا کہ تحریک انصاف کی نااہل حکومت نے ہر شعبہ کو تباہ کردیا ہے۔ جب ہسپتال بھی ٹیکس دیں گے تو صحت کی سہولیات عوام کی پہنچ سے دور ہوں گی۔ پاکستان پیپلز پارٹی نے کبھی بھی عوامی خدمات کے شعبوں کو تنگ نہیں کیا۔ تحریک انصاف سیاسی انتقام اور استحصال کرنے میں حواس باختہ ہو چکی ہے۔لہذا حکومت ہوش کے ناخن لے اور ہسپتالوں سے سیلز ٹیکس کے نفاذ کا فیصلہ فوری واپس لے۔علاوہ ازیں مشیر اطلاعات قانون و اینٹی کرپشن سندھ بیرسٹر مرتضی وہاب کے نرسوں سے مزاکرات کامیاب ہوگئے مشیر اطلاعات بیر سٹر مرتضی وہاب نے مذاکرات کے بعد نرسوں کا پی آئی ڈی پر احتجاج ختم کرا دیا اس موقع پر انہوں نے کہا کہ چوبیس گھنٹے میں مطالبات کی منظوری سے متعلق نوٹیفیکشن جاری کردیا جائیگا کیونکہ پیپلزپارٹی کی سندھ حکومت عوام کے مسائل کے حل پر یقین رکھتی ہے۔ اور عوام کی صحت سے متعلق کوئی سمجھوتا قبول نہیں کیا جائے گا۔اس موقع پر مظاہرین سے بات چیت کرتے ہوئے بیرسٹر مرتضی وہاب نے کہا کہ وزیراعلی سندھ نے آپ کے احتجاج کا نوٹس لیا ہے۔حکومت آپ کے مسائل حل کرنا چاہتی ہے احتجاج آپکا حق ہے لیکن احتجاج مہذب انداز میں ہوتو بہتر ہے۔ وزیراعلی کی ہدایت پر حراست میں لئے گئے تمام افراد کو رہا کردیا گیا ہے آپ کسی کے بہکاوے میں مت آئیں وزیراعلی نے سیکریٹری صحت کو آپکے تمام مسائل فوری حل کرنے کی ہدایت کی ہے آپ تسلی رکھیں مسائل حل ہونگے ہم نہیں چاہتے کہ ہماری مائیں بہنیں اپنے مسائل کے حل کے لئے سڑکوں پر احتجاج کریں کل بعد نماز جمعہ تک آپ کے مطالبات کا نوٹیفکیشن جاری کردیا جائیگا۔ دریں اثناء بیرسٹر مرتضی وہاب نے ایل این جی کیس میں شاہد خاقان عباسی کی گرفتاری کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم سمجھتے ہیں عدالت سے جرم ثابت ہونے تک شاہد خاقان عباسی کی گرفتاری اورسیاسی حریفوں کو گرفتار کرنے کا عمل قابل مزمت ہے بنی گالا سے اجازت ملنے پرگرفتاریاں عمل میں لائی جاتی ہیں صرف پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ن کے رہنماؤں کو سیاسی انتقام کا نشانہ بنایا جارہا ہے آصف علی زرداری،فریال تالپور اور شاہد خاقان کے خلاف کوئی جرم ثابت ہوا ہے تو بتایا جائے۔نیب اور وفاقی حکومت کو سوچنا چاہیے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر