جاپان کی معاونت سے آٹو پارٹس انڈسٹری میں بہتری آئی، جائیکا

  جاپان کی معاونت سے آٹو پارٹس انڈسٹری میں بہتری آئی، جائیکا

  



لاہور(نیوز رپورٹر)جاپان کی تکنیکی معاونت سے پاکستان کی آٹو پارٹس مینوفیچرنگ انڈسٹری کی مصنوعات میں کوآلٹی اور پرادکٹوٹی کے حوالے سے خاطر خواہ بہتری آئی ہے جس کی بدولت مقامی آٹو پارٹس اب عالمی منڈی میں بھی اپنی جگہ بنا سکیں گے۔ یہ بات سمال اینڈ میڈیم انٹر پرائزز ڈویلپمنٹ اتھارٹی (سمیڈا) کے جنرل مینیجر سنٹرل سپورٹ فواد ہاشم ربانی نے آج سمیڈا اورجائیکا کے اشتراک سے جاری چار سالہ تکنیکی پروگرام کے دوسرے مرحلے کی تکمیل کے حوالے سے منعقدہ تقریب سے خطاب کر تے ہوئے کہی۔تقریب کے مہمان خصوصی جاپان انٹرنیشنل کوآپریشن ایجنسی (جائیکا) چیف رپریزنٹیٹو مسٹر شگیگی فروٹا تھے۔ جبکہ اس موقع پر جائیکا کی پراجیکٹ فارمولیشن ایڈوائزر اینا یونوئے اور جاپانی ایکسپرٹ مسٹر یوسی ہیرو کینیکی کے علاوہ پاپام کے وائس چیئرمین بشارت جاوید، سمیڈا کے جنرل مینیجر بزنس اینڈ سیکٹر دویلپمنٹ اشفاق احمد نے بھی خطاب کیا۔ سمیڈا کی نمائیندے کے طور پر خطاب کرتے ہوئے فواد ہاشم نے اپنے خطاب میں کہا کہ آٹو پارٹس کی صنعت پاکستان میں بڑی تیز ی سے ترقی کر رہی ہے لیکن افسوس کہ تکینکی مہارت اور پیداواری جدت طرازی کے فقدان کی وجہ سے اس انڈسٹری کو عالمی منڈی میں پذیرائی نہیں مل پا رہی تھی۔

انہوں نے کہا کہ اس کمی کو پورا کرنے کیلئے سمیڈا نے پاپام کے ساتھ ملکر جائیکا کے تعاون سے پہلی بارچار سال پر محیط ایک طویل المدتی پروگرام شروع کیا جس کا پہلا مرحلہ کراچی میں مکمل ہوا اور اب دوسرا مرحلہ پنجاب کی آٹوپارٹس انڈسٹری کی ترقی کیلیئے کام کرتے ہوئے مکمل ہوگیا ہے۔ انہوں نے اس امر پر خوشی کا اظہار کیا کہ مذکورہ پراجیکٹ کی وجہ سے مقامی آٹو پارٹس مصنوعات کی نہ صرف کوآلٹی میں اضافہ ہوا ہے بلکہ پیدواری مراحل کے نقائص دور ہوجانے کی وجہ سے پراڈکٹوٹی بھی بہتر ہو گئی ہے۔جس کے نتیجے میں آٹوپارٹس کی بعض مصنوعات برآمد ہونا شروع ہو گئی ہیں۔اس موقع پر جائیکا کے چیف رپریزنٹیٹو مسٹر شگیگی فروٹا نے مہمان خصوصی کے طور پر اپنے خطاب کے دوران کہا کہ پاکستان کی آٹو پارٹس مینوفیکچرنگ انڈسٹری تکنیکی شعبہ میں جدید طریقے اپنا کر دنیا میں اپنی جگہ بنانے کی بھرپور صلاحیت رکھتی ہے اور جاپان اس ضمن میں پاکستان کے ساتھ بھرپور تعاون کر رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ مقامی انڈسٹری کے دیرینہ مطالبے اور اہم ضرورت کو مد نظر رکھتے ہوئے ہم نے پاکستان کی آٹو پارٹس انڈسٹری کیلئے چا لیس سال سے زائد تجربہ رکھنے والے پانچ جاپانی ماہرین کی ٹیم چا ر سال کیلئے پاکستان میں تعینات کر رکھی تھی جس نے خوش اسلوبی سے اپنے کام کا پہلہ اور اب دوسرا مرحلہ بھی مکمل کر لیا ہے۔ انہوں نے اس کام میں سمیڈا اور پاپام کے پرجوش اشتراک عمل کی تعریف کی۔پاپام کے وائس چیئرمین بشارت جاوید نے اس موقع پر خطا ب کرتے ہوئے سمیڈا اور جائیکا کا شکریہ ادا کیا کہ جن کی کاوشوں سے پاپام کے ممبر یونٹوں کی کوآلٹی اور پراڈکٹوٹی میں نمایاں بہتری آئی ہے۔ انہوں کہا کہ اس طرح کے پراجیکٹ کیلئے پاپام آئیندہ بھی اپنا تعاون جاری رکھے گی۔قبل ازیں سمیڈا کے انڈسٹری سپورٹ سیل کے سربراہ وجنرل مینیجر بزنس اینڈ سیکٹر ڈویلپمنٹ اشفاق احمد نے ابتدائیہ کلمات میں بتا یا کہ پاپام نے مذکورہ پروگرام کے تحت کل 52 یونٹو ں کو منتخب کیاگیا تھا جن میں سے 17 یونٹوں کو ماڈل کمپنیاں قرار دیا گیا ہے۔ تاہم دیگر یونٹو ں کو اس منصوبے سے مستفید کرنے کیلئے جاپانی ماہرین کی زیر نگرانی مقامی ماہرین کی ایک ٹیم تیار کی جارہی ہے جو جاپانی ٹیم کے اخراج کے بعد انکے بتائے ہوئے طریقوں اور تربیت کے مطابق یہ پروگرام جاری رکھے گی۔

مزید : کامرس