شانگلہ،پانی کا بحران شدید،عوام بوند بوند کو ترس گئے

شانگلہ،پانی کا بحران شدید،عوام بوند بوند کو ترس گئے

  



الپوریئ(رپورٹ:آفتاب حسین)شانگلہ کے صدر مقام الپوری میں پانی کے بحران شدت اختیار کرگیا، تیسرے ہفتے بھی پانی بحال نہ ہو سکی، ہیڈ کوارٹر بازار،ملحقہ کالونی میں پانی ناپید ہو گیا،پینے کا پانی تک د ستیاب نہیں۔انجمن تاجر،سول کالونی کے مکین سراپا احتجاج بن گئے۔ پانی مسئلے کے حل کیلئے دو دن کا ڈیڈلائن، سڑک بلاک کرنے اور شٹر ڈاؤن کی دھمکی دے دی۔ محکمہ پبلک ہیلتھ غفلت کا مرتکب ہورہی ہے،کوئی کام نہیں کرتا ہے، ندی پر واقع واٹر سپلائی سکیم کی پرانی ٹینکی بھی تھوڑ ڈالی، محکمہ کے ملازمین ایم این ڈار کا ٹھیکہ دیگر ٹھکیداروں کے کاغزات پر لیتے ہیں اور خود اس سکیم پر بلیں بھی پاس کرواتے ہیں محکمہ بلک ہیلتھ کرپشن کا گڑھ بن گیا ہے،محکمہ کے اہلکاران سکیم کے پائپ اونے پونے داموں بیچتے ہیں جبکہ محکمے کے افسران ان اہلکاروں کی سرپرستی کرتے ہیں۔ پبلک ہیلتھ محکمہ کنزیومر کورٹ کے فیصلہ پر عمل درآمد نہیں کر رہی،ہیڈ کوارٹر کا یہی حال ہے تو دوردراز کے علاقوں کا اللہ ہی حافظ۔۔؟۔ایکسین پبلک ہیلتھ کے یقین دہانی کے باوجود پانی بحال نہ ہوسکے،اسسٹنٹ کمشنر اور ڈپٹی کمشنر کے احکامات کے باوجود محکمہ پبلک ہیلتھ کے کانوں پر جوں تک نہیں رینگتی،انتظا میہ کی اس بے بسی پر عوامی حلقوں نے شدید رد عمل کا اظہار کیا ہے،واضح رہے کہ مون سون بارشوں کے دوران خراب ہونے والی واٹر سپلائی سکیم گزشتہ تین ہفتوں سے الپوری بازار، سول کالونی اور دیگر سر کاری دفاتر پانی سے محروم ہے۔ضلع انتظامیہ کے احکامات پر عمل نہ ہوسکا،الپوری بازار کے ہوٹلوں دوکانوں اور دیگر مقامات پرپانی کی قلت کی وجہ سے صفائی کا برا حال ہے،عوام کا پیمانہ صبر لبریز ہوچکا ہے۔ انجمن تاجر شا نگلہ نے کہا ہے کہ اگر صورتحال اس طرح برقرار رہی تو ہم احتجاج پر مجبور ہوجاینگے، ہیڈ کوارٹر بازار میں شٹر ڈاؤن ہوگا اور مینگورہ تا بشام روڈ کو احتجاجاً بلاک کرینگے۔ پبلک ہیلتھ کنزیومر کورٹ کے احکامات کو بھی کوہ کھاتے میں ڈال دے۔انھوں نے کہا کہ ہم اپنے حقوق کیلئے کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کرینگے۔ محکمہ پبلک ہیلتھ ہر سال ایم این ڈارمیں ٹھکیدار کے ساتھ مک مکاکرکے اس سکیم پر فنڈ نکلواتے ہیں لیکن گزشتہ کئی برسوں سے اس سکیم پرکوئی کام نہیں ہوا جس کی وجہ سے موسون بارشوں کے دوران یہ واٹر سپلائی لائن خراب ہوجاتی ہے جبکہ محکمہ نے پرانی ٹینکی بھی تھوڑ ڈالی ہے اور مین لائن کو ندی میں ڈال دیا ہے۔ ہیڈ کوارٹر بازار،ملحقہ کالونی میں پانی کی شدید قلت شروع ہوا ہے۔انجمن تاجر،سول کالونی کے مکین کا کہنا ہے کہ اگر ڈپٹی کمشنر کے احکامات پر عمل نہیں ہوتاتو ہم کیا کر سکتے ہے۔انھو ں نے سیکرٹری پبلک ہیلتھ سے مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ سول کالونی اور ہیڈ کوارٹر بازارکیلئے واٹر سپلائی سکیم پر نکل جانے والے فنڈ کا تحقیقات کرکے ذمہ داران کو نشان عبرت بنائے۔۔

مزید : صفحہ اول


loading...