سرکار ی افسر وعدہ معاف گواہ کیوں بنتے ہیں؟ احسن اقبال نے بتادیا

سرکار ی افسر وعدہ معاف گواہ کیوں بنتے ہیں؟ احسن اقبال نے بتادیا
سرکار ی افسر وعدہ معاف گواہ کیوں بنتے ہیں؟ احسن اقبال نے بتادیا

  



لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن) مسلم لیگ ن کے رہنما احسناقبال نے کہاہے کہ کسی بھی سرکاری افسر کو نیب میں بلا کر کہوکہ تم وعدہ معاف گواہ بن جاﺅ تو وہ ایک کروڑیا پچاس لاکھ کاوکیل نہیں کرے گا ، وہ وعدہ معاف گواہ بن جائیگا، خاقان عباسی کے خلاف کوئی بد عنوانی کا کیس نہیں ہے ، وہ یہ بات واضح کرچکے ہیں کہ میں ہر الزام کا جواب دوں گا۔

دنیا نیوز کے پروگرام ”اختلافی نوٹ “میں گفتگو کرتے ہوئے احسن اقبال نے کہا کہ شاہد خاقان عباسی کے خلاف کوئی بد عنوانی کا کیس نہیں ہے ، وہ یہ بات واضح کرچکے ہیں کہ میں ہر الزام کا جواب دوں گا ۔ ان کا کہنا تھا کہ شاہد خاقان عباسی نے گیس کا وہ ٹرمینل لگایا جو دس سال سے نہیں لگ رہاتھا لیکن یہ بات سن کا افسوس ہوا جب ان سے کہا گیا کہ ان کی غفلت کی وجہ سے ملک کوڈیڑھ ارب کانقصان ہوا ۔ انہوں نے کہا کہ کسی بھی سرکاری افسر کو نیب میں بلا کر کہوکہ تم وعدہ معاف گواہ بن جاﺅ تو وہ ایک کروڑیا پچاس لاکھ کاوکیل نہیں کرے گا ، وہ وعدہ معاف گواہ بن جائیگا۔

احسن اقبال نے کہا کہ ہمارا قوم سے وعدہ تھا کہ ہم نے ملک سے توانائی کا بحران ختم کرناہے ، ہمارا انتظامی ڈھانچہ بعض معاملات میں سپورٹ نہیں کرتا،مسئلہ یہ ہے کہ ہمارا سابقہ ایک ایسی حکومت سے پڑاہے ، اس کی کوئی کارکردگی نہیں ہے اور عوام کو دکھانے کیلئے اس کے پاس کچھ نہیں ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پچھلے ایک سال سے نیب کی توپوں کا رخ ن لیگ اوراپوزیشن کی طرف ہے ۔ کیا یہ حقیقت نہیں ہے کہ مالم جبہ کا کیس زیر پراسس نہیں ہے کہ کیایہ حقیقت نہیں ہے کہ پشاورمیٹر و کا منصوبہ ابھی تک مکمل نہیں کیا جاسکا اورکہاں سے کہا ںپہنچ گیاہے ؟ یہ نیب کونظر نہیں آرہا ہے ۔ یہ جوکام ہورہے ہیں ، اس کے بعد کوئی پاکستان میں کام نہیں کرے گا ۔

مزید : قومی