فضائی حدود کی بندش کے باعث بھارت کو نقصان کی باتیں تو سنتے ہی رہتے ہیں لیکن پاکستان کو کتنے سو کروڑ کا نقصان برداشت کرنا پڑا؟ ناقابل یقین خبر آگئی

فضائی حدود کی بندش کے باعث بھارت کو نقصان کی باتیں تو سنتے ہی رہتے ہیں لیکن ...
فضائی حدود کی بندش کے باعث بھارت کو نقصان کی باتیں تو سنتے ہی رہتے ہیں لیکن پاکستان کو کتنے سو کروڑ کا نقصان برداشت کرنا پڑا؟ ناقابل یقین خبر آگئی

  



کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن) 27 فروری کو بھارت کی فضائی حدود کی بندش کے باعث یہ تذکرہ تو کیا جاتا ہے کہ بھارت کو کتنے سو کروڑ روپے کا نقصان ہوچکا ہے لیکن اب یہ بات پہلی بار سامنے آئی ہے کہ فضائی حدود کی بندش کے باعث پاکستان کو بھی اربوں روپے کا نقصان اٹھانا پڑا ہے۔

فضائی حدود کی بندش کے باعث دونوں ممالک کو ہونے والے نقصان کے بارے میں وفاقی وزیر برائے ہوا بازی غلام سرور خان نے گفتگو کی ہے۔ سول ایوی ایشن ہیڈ کوارٹر میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ فروری میں بھارت کی طرف سے آنے والی ایئر ٹریفک کو بند کیا گیا تو اس کے باعث سول ایوی ایشن اتھارٹی کو ساڑھے 8 ارب روپے کا نقصان اٹھانا پڑا۔ ’یہ ہماری صنعت کا مجموعی سطح پر بڑا نقصان ہے تاہم اس پابندی سے بھارت کو ہم سے دوگنا نقصان ہوا ہے ، اس اہم موڑ پر دونوں طرف سے کشیدگی میں کمی کرنے والے اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے۔‘

وفاقی وزیر ہوا بازی نے بتایا کہ 2025 تک پی آئی اے کی بحالی کے ساتھ ساتھ اس کے طیاروں کی تعداد میں 14 کا اضافہ کرکے مجموعی تعداد 45 تک لے جائیں گے۔پہلے اوپن سکائی پالیسی کے باعث ملکی ایئر لائنز کو نمو کے مواقع نہیں مل رہے تھے لیکن اب نئی فیئر سکائی پالیسی مقامی ایئرآپریٹرز کو نمو کے یکساں مواقع فراہم کرتی ہے۔اس سلسلے میں پاکستان کے وسیع تر مفاد میں مختلف ممالک کے ساتھ کئے گئے فضائی خدمات کے معاہدوں کا بھی از سر نو جائزہ لیا جائے گا۔

مزید : قومی