وزیراعظم کی عثمان بزدار کو تھپکی، ڈائنا مک وزیراعلٰی قرار، مکمل اعتماد کا ظہار، بے خوف کام جاری رکھنے کی ہدایت، صوبے میں کرپشن ختم نہ ہونے پر اظہار برہمی، خراب ملکی نظام ترقیاتی منصوبوں کی ناکامی کا سب سے بڑا سبب ہے: عمران خان

      وزیراعظم کی عثمان بزدار کو تھپکی، ڈائنا مک وزیراعلٰی قرار، مکمل اعتماد ...

  

لاہور (ما نیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) وزیراعظم عمران خان نے وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار پر مکمل اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے انہیں بے خوف کام جاری رکھنے کی ہدایت کر دی، جس کے بعد عثمان بزدار کو عہدے سے ہٹائے جانے کی افواہیں دم توڑ گئیں۔ وزیراعظم عمران خان ایک روزہ دورے پر گزشتہ روزلاہور پہنچے اور ایوانِ وزیراعلیٰ میں وزیراعلیٰ عثمان بزدار سے ملاقات کی۔وزیراعلیٰ نے آٹے، گندم کی صورتحال اور انسداد کورونا کیلئے کئے گئے اقدامات سے آگاہ کیا،وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے وزیراعظم کو بریفنگ دیتے ہو ئے کہا پنجاب حکومت نے اپنے اخراجات میں واضح کمی، لاہور کے شمال میں جدید شہر بسانے کیلئے ریور راوی فرنٹ اتھارٹی قائم کی ہے، اتھارٹی نیا شہر بسانے کیلئے کام کرے گی، نیا شہر دبئی کی طرز پر بسایا جائے گا، نیا شہر ایک لاکھ ایکڑ سے زائد رقبے پر بنایا جائے گا، نجی شعبے کی جانب سے 5 ہزار ارب روپے کی سرمایہ کاری متوقع ہے۔وزیراعظم عمران خان نے عوامی ریلیف کیلئے صوبائی حکومت کے اقدامات پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا پنجاب حکومت نے انسداد کورونا کیلئے بہترین کام کیا۔ وزیراعظم نے ریور راوی فرنٹ اتھا ر ٹی کے قیام اور پنجاب میں جاری ترقیا تی منصوبوں سمیت دیگر کارکردگی کو سراہا۔اس موقع پر عمران خان نے کہا سمارٹ لاک ڈاؤن پر حکومت کی جانب سے ایس او پیز پر زبر د ست عملدآمد کروایا، حکومتی اقدامات کے باعث کورونا وائرس کے کیسز میں واضح کمی ہوئی، اب حالات بہتر ہو رہے ہیں، عوام کو حکومتی ایس او پیز پر عملدآمد کرنا اور حکومت کا ساتھ دیتے رہنا ہوگا، دریں اثنا حکومتی ذرائع کے مطابق وزیراعظم نے ایک مرتبہ پھر عثمان بزدار پر اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے واضح کردیا کہ پنجاب کے وزیراعلیٰ عثمان بزدار ہی رہیں گے۔ خیا ل رہے کہ گزشتہ کئی روز سے سوشل میڈیا پر وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کو تبدیل کیے جانے سے متعلق افواہیں زیر گردش ہیں لیکن گزشتہ روز وزیر اطلاعات شبلی فراز نے بھی ان افوا ہو ں کی تردید کی تھی۔

وزیراعظم اعتماد

لاہور (جنرل رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) وزیراعظم عمران خان نے ایک بار پھر وزیر اعلی پنجاب کی تعریف کرتے ہوئے کہا ہے کہ عثمان بزدار ایک ڈائنامک وزیراعلی ہیں جنہوں نے بہت زبردست لوکیشن پر قائداعظم بزنس پارک پراجیکٹ بنایا ہے،ماضی میں جنوبی پنجاب کیلئے بہت کم فنڈ مختص رکھتے جاتے رہے ہیں ملک کے پس ماندہ علاقوں کی ترقی موجودہ حکومت کی اولین ترجیح ہے، پانچ سالوں میں 50 لاکھ گھر بنائیں گے، غریبوں کو سستے گھروں کی فراہمی کے طریقہ کار میں آسانی پیدا کی ہے، چینی کمپنیاں پاکستان میں سرمایہ کاری کرنا چاہتی ہیں، چینی کمپنیوں نے پاکستانی طریقہ کار کو آسان کرنے کا کہا ہے۔قائداعظم بزنس پارک شیخوپورہ کے سنگ بنیاد کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا پاکستان میں 60کی دہائی کے بعد پلاننگ کمیشن ہی ختم کروا دیا گیا، ہماری پلاننگ یہ ہوتی ہے کہ بس الیکشن جیت جائیں، اس سوچ کی وجہ سے پاکستان پیچھے رہ گیا ہے۔ماضی میں سیاسی فائدے کی خاطر صرف قلیل مدتی منصوبہ بندی کی گئی۔ 60 کی دہائی میں ہم انڈسٹرلائزیشن کی وجہ سے پیچھے رہ گئے۔کوئی بھی قوم انڈسٹریلائزیشن کے بغیر ترقی نہیں کرسکتی۔ ملک میں کاروباری سرگرمیو ں کیلئے آسانیاں پیدا کررہے ہیں۔ وزیراعظم عمران خان نے اس منصوبے کیلئے وفاقی حکومت مکمل تعاون کرے گی۔ ہمارا سسٹم ترقی کی راہ میں رکاوٹ ہے۔سسٹم ایسا ہے کہ کسی کو آسانی سے کام نہ کرنے دیا جائے۔ سرخ فیتہ کلچر کسی کو کام نہیں کرنے دیتا۔ ہم آہستہ آہستہ رکاوٹیں دور کریں گے۔ حکومتی اداروں میں اصلاحات کا عمل شروع کردیا،تاہم یہ ایک دن میں نہیں ہوتیں۔ ملکی تاریخ میں پہلی بار تعمیراتی شعبے کو مراعات دیں۔غریب افراد کو سستے گھروں کی فراہمی کے لیے نیا پاکستان ہاسنگ منصوبہ شروع کی۔ عام آدمی کیلئے تعمیراتی شعبے میں رکاوٹیں تھیں۔ مزید برآں وزیراعظم نے کہا ماضی میں جنوبی پنجاب کیلئے بہت کم فنڈ مختص کیے گئے۔ملک کے پسماندہ علاقوں کی ترقی موجودہ حکومت کی اولین ترجیح ہے۔وزیر اعظم نے جنوبی پنجاب صوبے کے قیام کے حوالے سے کمیٹی تشکیل کرنے کی ہدایت کی ہے۔بعدازاں وزیراعظم کی زیر صدارت راوی ریور فرنٹ اربن ڈویلپمنٹ منصوبے کی اسٹیرنگ کمیٹی کا اجلاس ہواجس میں چیف سیکریٹری پنجاب جواد رفیق ملک نے منصوبہ پر بریفنگ دی،وزیراعظم عمران خان نے دریائے راوی کے کنارے نیا شہر آباد کرنیوالے راوی ریور فرنٹ اربن ڈویلپمنٹ منصوبے پر کام جلد شروع کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا منصوبہ پنجاب کی معیشت اور لاہور شہر کی رہائشی ضروریات کو پورا کرنے کیلئے اہم ہے، لوگوں کو نوکریاں دینے میں مدد ملے گی،پراجیکٹ سے لاہور کے رہائشیوں کیلئے پانی کی کمی سے نمٹنے میں مدد ملے گی، حکومت ترقیاتی منصوبوں سے متعلق ہر رکاوٹ ترجیحی بنیادوں پر دور کرنے کیلئے پرعزم ہے، پراجیکٹ کی تکمیل کے دوران ماحولیاتی نظام پر منفی اثرات مرتب نہ ہوں۔ واٹر کنزرویشن کا خاص خیال رکھا جائے۔ منصوبے سے اسلام آباد کی طرز پر جدید اور ماڈرن سٹی کا قیام عمل میں آئے گا۔ ٹائم لائنز کے تحت منصوبے کا جلد از جلد آغاز کیا جائے۔بعدازاں وزیراعظم عمران خان نے پنجاب میں ممبران اسمبلی سے ملاقات کی اور دوران گفتگو پنجاب میں کرپشن ختم نہ ہونے پربرہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ادارے ناسور کو ختم کرنے کیلئے ٹھوس اقدامات اٹھائیں۔ عمران خان کا کہنا تھا پنجاب میں نچلی سطح پر کرپشن ختم ابھی تک نہ ہو سکی، ادا رے کیا کر رہے ہیں۔ کرپشن سے متعلق مجھے میانوالی،لاہور اور دیگر اضلاع سے بہت کچھ پتا چلا ہے۔ملاقات کے دوران ایم این اے ریاض فتیانہ نے وزیراعظم عمران خان سے درخواست کی جو علاقے بجلی سے محروم ہیں وہاں بجلی مہیا کی جائے۔اس پر وزیراعظم نے حکم جاری کرتے ہوئے کہا یہ بات درست ہے جن علاقوں میں بجلی نہیں وہاں ہونی چا ہیے، بجلی کی فراہمی کیلئے وفاق و صوبے ملکر کام کریں تاکہ بچے پڑھ سکیں۔ ملا قا ت کے دوران اراکین اسمبلی نے وزیراعظم عمران خان کے سامنے تحفظات کی بھر مار کرتے ہوئے کہا وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار صوبائی اسمبلی اراکین کو زیادہ جبکہ قومی اسمبلی کی اراکین کو کم ملتے ہیں، ہمارے حلقوں کے مسائل حل نہیں ہوئے، ترقیاتی سکیموں سے محروم ہیں۔ان تحفظات کو سننے کے بعد وزیراعظم عمران خان نے وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کو ممبران اسمبلی کے تحفظات فوری طور پر دورکرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا جو بھی کنفیوژن ہے اسے فوری ختم کی جائے، بزدار صاحب آئندہ کوئی گلہ شکوہ نہیں ہونا چاہے، تحفظات درست ہیں، ترقیاتی سکیمیں جہاں ممکن ہیں وہ شروع کی جائیں گی۔وزیراعظم عمران خان نے کہا عوام کے مسائل کے فوری حل، فلاحی، سماجی اور معاشی ترقی کیلئے تمام وسائل بروئے کار لائے جائیں گے،ممبران اسمبلی عوام سے مستقل رابطے میں رہیں اور کسی بھی مسئلے کے حل کے حوالے سے درپیش انتظامی مشکل کی صورت مجھے فوری طور پر آگاہ کیا،بھکر، خوشاب، مظفر گڑھ اور لیہ کے عوام کیلئے تھل کینال منصوبے کے آغاز کا فیصلہ ہو چکا ہے، منصوبے پر کام کا آغاز بھی جلد ہوگا۔وزیر اعظم عمران خان سے ملاقات کرنیوالے ارکان اسمبلی میں ملک محمد عامر ڈوگر، ذوالفقار علی خان، سید فیض الحسن، حاجی امتیاز احمد چوہدری، ملک عمر اسلم خان، مہر غلام محمد لالی، ریاض فتیانہ، ملک کرامت علی کھوکھر، رائے محمد مرتضی اقبال، احمد حسین ڈیہڑ، میاں محمد شفیق، طاہر اقبال، نیاز احمد جکھڑ اور سردار محمد خان لغاری شامل تھے۔ملاقات میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی اور وزیر اعلی پنجاب سردار عثمان بزدار بھی شریک تھے۔ وزیراعظم عمران خان کا ممبران اسمبلی کو کہنا تھا لاہور میں آپ سے ملاقات کا مقصد صوبائی حکومت سے موثر رابطے اور کوارڈی نیشن میں مزید بہتر ی لانا ہے تاکہ صوبائی حکومت ممبران کو ان کے متعلقہ حلقوں میں عوام کو درپیش مسائل کے حل کے حوالے سے ممکنہ معاونت فراہم کرے۔ وزیراعظم عمران خان نے وزیر اعلی پنجاب سردار عثمان بزدار کو ممبران کو انتظامی امور میں درپیش مشکلات کے حل کے حوالے سے ہر ممکن تعاون کی ہدایت کی تاکہ عوام کے مسائل کا فوری حل ممکن ہو سکے۔قبل ازیں وزیراعظم عمران خان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا رکاوٹوں اور سفری مشکلات کے باوجود بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کو واپس لانے کا وعدہ پورا کیا، دنیا بھر سے 2 لاکھ 50 ہزار پاکستانیوں کو وطن واپس لایا گیا۔ حکومت بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کی ہر ممکن مدد کرتی رہے گی۔

عمران خان

مزید :

صفحہ اول -