تاجر اتحاد خیبر پختونخوا کا بڑھتی ہوئی مہنگائی کے خلاف احتجاجی مظاہرہ

تاجر اتحاد خیبر پختونخوا کا بڑھتی ہوئی مہنگائی کے خلاف احتجاجی مظاہرہ

  

پشاور (سٹی رپورٹر)تاجر اتحاد خیبر پختونخوا نے بڑھتی مہنگائی اور لاک ڈاون کے نام پر بازاروں کو سیل کرنے کیخلاف پشاور پریس کلب کے سامنے ہفتہ کے روز کفن پوش احتجاجی مظاہرہ کیا گیا مظاہرین کی قیادت تاجر اتحاد کے صوبائی صدر مجیب الرحمن کر رہے تھے اس موقع پر ظفر منہاس، محمد آفتاب خان،حاجی عطاء اللہ، حاجی فیاض، نصیرالدین ہاشمی،عزیز خان شاہد خان سردار حسین، زبیر خان،انور خان جبکہ احتجاج میں مختلف تاجر تنظیموں نے بھی شرکت کی مظاہرین نے کہا کہ تاجروں کے ساتھ موجودہ صوبائی اور وفاقی حکومت نے ٹیکسز میں چھوٹ، مہنگائی کم کرنے، بجلی کے نرخوں میں کمی لانے اور دیگر قسم کی ریلیف کی فراہمی کے وعدے کئے تھے لیکن اس کے برعکس نہ صرف ٹیکسز بڑھا دیئے گئے بلکہ مہنگائی روزانہ کی بنیاد پر بڑھ رہی ہے جس سے نہ صرف عوام متاثر ہو رہے ہیں بلکہ اس پورے عمل کا تاجروں پر انتہائی منفی اثرات مرتب ہو رہے ہیں اور روزگار سے وابستہ طبقہ بری طرح متاثر ہو رہا ہے انہوں نے کہاکہ لاک ڈاون میں پانچ دنوں کیلئے بازار کھلا رکھنا مذاق ہے اور تاجروں کو پورا ہفتہ بازار چوبیس گھنٹے کھلا رکھنے کی اجازت دی جائے جس سے گاہک بھی تقسیم ہونگے اور کورونا وائرس کے پھیلنے کے خطرات کم ہو سکیں گے تاکہ ان کا کاروبار چل سکے شادی ہالوں کو کھول دیا جائے اسی طرح تاجروں کو مختلف ٹیکسز میں چھوٹ دیکر ریلیف فراہم کیا جائے 30 اکتوبر 2019 کو تاجروں کے ساتھ کئے گئے معاہدے پرمکمل عمل درآمد کیا جائے پراپرٹی ٹیکس 20،21،کمرشل بلڈنگ میں کمی کی جائے اور اس کے ساتھ تاجروں کو بلاسود قرضے کے سکیم کا اعلان کیا جائے استعمال شدہ گاڑیوں اور موبائل بزنس کو بہال کیا جائے تاجر انڈسٹری کی پرانی تاریخ بہال کی جائے جیولرز کے لئے خصوصی ٹیکس مراعات اور قابل عمل ٹیکس کا نفاذ کیا جائے حکومت کی طرف سے نام نہاد سرکاری نرخنامیکو منسوخ کرکہ قیمتوں کے تعین کے لیے آزاد اتھارٹی بنائی جائے آٹا چینی اور کاروبار کرنے والے تاجروں کو ہراساں کرنا بند کیا جائے اور ظالمانہ جرمانوں اور سزاؤں کو ختم کیا جائے جنوری 2020 میں وزیراعظم کہ اعلان کے مطابق مختلف بازاروں کے لائسنس فیس ختم کرنے کا اجراء کیا جائے پروفیشنل ٹیکس میں تاجروں کو مستشنع کیا جائے سائن بورڈ ٹیکس مکمل ختم کیا جائے کویڈ 19 کی وجہ سے ٹریڈ ٹیکس اس سال معاف کیا جائے 30 اکتوبر 2019 وزیراعظم کے اعلان کے مطابق ایک سو قسم کہ ٹیکس معاف کر دئیے گئے لیکن وضع نہیں کیے گئے سمگلنگ کی روک تھام کا بہانہ بنا کر کسٹم حکام کی استحصالی کاروائی بند کی جائے ریاست ٹیکس نظام میں بنیادی اصلاحات کرے اور تاجروں کے ساتھ نیا معاشی کنٹریکٹ کرے تاکہ لوگ روز گار کرسکے.

مزید :

صفحہ اول -