طالبان نے ملا عمر کے صاحبزادے کو اہم ترین ذمہ داری سونپ دی، افغان حکومت کے ہوش اڑادیے

طالبان نے ملا عمر کے صاحبزادے کو اہم ترین ذمہ داری سونپ دی، افغان حکومت کے ...
طالبان نے ملا عمر کے صاحبزادے کو اہم ترین ذمہ داری سونپ دی، افغان حکومت کے ہوش اڑادیے

  

کابل (ڈیلی پاکستان آن لائن) امارت اسلامی افغانستان (طالبان) کی جانب سے بین الافغان مذاکرات کیلئے تشکیل دی گئی ٹیم میں 4 نئے ارکان کا اضافہ کیا گیا ہے، اس ٹیم میں طالبان کے پہلے امیر ملا عمر کے بڑے صاحبزادے اور طالبان کے ملٹری ونگ کے سربراہ ملا محمد یعقوب کو بھی شامل کیا گیا ہے۔

ایسوسی ایٹڈ پریس کی رپورٹ کے مطابق طالبان نے بین الافغان مذاکرات کیلئے اپنی ٹیم میں طاقتور شخصیات کو شامل کیا ہے جس کی منظوری طالبان کے امیر ملا ہبت اللہ نے دی ہے۔

ملا ہبت اللہ کی منظوری کے بعد طالبان کے ملٹری ونگ کے سربراہ اور جماعت کے نائب امیر ملا محمد یعقوب کو مذاکراتی ٹیم کا حصہ بنایا گیا ہے۔ ان کے علاوہ طالبان دور کے چیف جسٹس مولوی ثاقب اور ملا ہبت اللہ کے قریبی ساتھی عبدالحکیم کو بھی مذاکراتی ٹیم کا حصہ بنایا گیا ہے۔

ایسوسی ایٹڈ پریس کو طالبان ذرائع نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا ہے کہ اس تبدیلی کے ذریعے طالبان فوجی اور سیاسی سطح پر اپنی گرفت مضبوط کر رہے ہیں۔

خیال رہے کہ ملا محمد یعقوب کو رواں برس مئی کے مہینے میں طالبان کے عسکری ونگ کا کمانڈر مقرر کیا گیا تھا۔

مزید :

بین الاقوامی -