عمران خان کی مقبولیت برقرار، پی پی، ن لیگی رہنما بھی متحرک، عوامی رابطہ مہم تیز

 عمران خان کی مقبولیت برقرار، پی پی، ن لیگی رہنما بھی متحرک، عوامی رابطہ مہم ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 
میلسی (نامہ نگار)سابق وزیر دفاع و وزیر اعلی پرویز خٹک کی جانب سے پی ٹی آئی پارلیمینٹیریز کے قیام اور ان کے عزیز وں کی مخالفت کے بعد بھی پی ٹی آئی کے میلسی کے کھلاڑی عمران خان کے شیدائی ہیں حالانکہ وہ خود مقدمات کا سامنا کر رہے ہیں جن(بقیہ نمبر23صفحہ6پر )
 کی نوعیت ریاستی لیول کی ہے اوراستحکام پاکستان پارٹی کی تشکیل پہلے ہی ہو چکی ہے اس کے باوجود پی ٹی آئی میلسی کے رہنما بضد ہیں کہ جب بھی الیکشن ہوئے عمران خان ہی جیتیں گے ۔کیونکہ انہوں نے نیا پا کستان کا تصور دیا ہے ۔اس بحث میں اعتدال ضروری ہے کہ الیکشن تو بعض ذرائع کے مطابق اکتوبر کے بعد نو مبر میں جاتے نظر آرہے ہیں ۔پنجاب اور کے پی کے بارے میں کھلاڑہوں کو جو یقین تھا اب اس میں بے یقینی نظر آرہی ہے ۔کہ دونوں صوبوں مہں دو نئی پا رٹیاں۔ آگئیں ۔کچھ کھلاڑی یہ کہتے نظر آرہے ہیں کہ ا نقلاب آکر رہےہیں ۔ادھر الیکشن قریب آتا دیکھ کر سیاسی شخصیات متحرک ہیں ۔الحاج سعید ا حمد خان اپنے بیٹو ں کے ہمراہ اور پیپلز پارٹی کے محمود حیات خان عرف ٹوچی خان ٹھنڈے کمروں سے نقل کر عوام میں. رابطے کی اٹیچمنٹ کر چکے ہیں عوام کو سابق حکومت کے نقصانات بتا رہے ہین اس سلسلے میں حالیہ دو میٹنگز کر چکے ہیں جس میں عوام کو بتایا جا رہا ہے کہ شہر کو پیرس بنادیں گے ۔عوام بھی تقاریر میں ہر بار کی طرح گم ہیں حالانکہ جمہوریت کےون ووٹ ون پرسن کے نظریے کے بعددونوں پارٹیاں مسلم۔لیگ ن اور پی پی پی برابر برابر عرصہ اقتدار میں رہیں مگر ضلع وہاڑی کی سب سے بڑی تحصیل نہ ضلع بن سکی اگر چہ وہاڑی میلسی کی تاریخ میں سب تحصیل رہی ہے مگر سیاسی دانشوروں کے مطابق یہاں کے سیاستدانوں نے "لڑا اور حکومت کرو "کی پالیسی اپنا ئی ۔ایک بھی ایسا سرکاری تعلیمی ادارہ نہ بنایا جس پر انحصار کیا جائے میٹرک کے بعد اگلے مدارج کی تعلیم بچے دیگر شہروں میں پاتے ہیں