سیما حیدر سے پہلے غیر قانونی طریقے سے بھارت جانے والی خاتون

سیما حیدر سے پہلے غیر قانونی طریقے سے بھارت جانے والی خاتون
سیما حیدر سے پہلے غیر قانونی طریقے سے بھارت جانے والی خاتون

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) ان دنوں پاکستان اور بھارت کے میڈیا پر پاکستان سے چار بچوں سمیت بھاگ کر بھارت جانے اور ہندونوجوان کے ساتھ شادی کرنے والی سیما حیدر کی کہانی چھائی ہوئی ہے۔ تاہم سیما پہلی خاتون نہیں ہے، جو پاکستان سے غیرقانونی طور پر بھارت گئی۔ انڈین ایکسپریس کے مطابق اس سے پہلے فوزیہ خان عرف چندا نامی لڑکی بھی شاہ رخ خان اور سلمان خان سے ملنے کے لیے بھارت آ گئی تھی۔
یہ 2015ءکا واقعہ ہے۔ چندا کسی طرح سمجھوتہ ایکسپریس میں چھپ کر کسی ٹکٹ اور پاسپورٹ کے بغیر ہی پاکستان سے بھارت میں داخل ہونے میں کامیاب ہو گئی۔ چندا واہگہ بارڈر کے ذریعے سمجھوتہ ایکسپریس میں بھارت میں داخل ہوئی اور مشرقی پنجاب کے شہر جالندھر تک چلی گئی۔ جہاں اسے گرفتار کر لیا گیا۔
گرفتاری کے بعد چندا نے سکیورٹی ایجنسیوں کو بتایا کہ وہ بھارت میں موجود درگاہوں پر جانے اور سلمان خان اور شاہ رخ خان سے ملنے کے لیے بھارت آئی ہے۔ وہ پنجابی، اردو اور ہندی بول سکتی تھی۔ وہ بھی کراچی ہی کی رہائشی تھی۔ 27سالہ چندا نے بتایا کہ وہ واہگہ سٹیشن سے 30جولائی 2015ءکو سمجھوتہ ایکسپریس میں سوار ہوئی۔اس کے پاس ایک بیگ تھا، جس میں کچھ ادویات اور کچھ پاکستانی کرنسی تھی۔ آج تک یہ معلوم نہیں ہو سکا کہ واہگہ۔ اٹاری بارڈر پر چندا انتہائی کڑی چیکنگ سے کیسے بچ کر نکل گئی۔ 
چندا کی گرفتاری کے بعد پاکستانی ہائی کمیشن نے بھارتی وزارت خارجہ کے ساتھ رابطہ کیا اور اس حوالے سے تفصیلات طلب کیں۔ چندا کو بھارت میں 2سال قید کی سزا سنائی گئی اور اسے سزا پوری ہونے پر 2018ءمیں واہگہ بارڈر کے راستے پاکستان واپس بھیج دیا گیا تھا۔

مزید :

قومی -