امریکی میزائل ڈیفنس سسٹم بھی ناکارہ نکلا

امریکی میزائل ڈیفنس سسٹم بھی ناکارہ نکلا
امریکی میزائل ڈیفنس سسٹم بھی ناکارہ نکلا

  

واشنگٹن (بیورونیوز ) 40 بلین ڈالر خرچ کرنے کے باوجود امریکی میزائل ڈیفنس سسٹم ناکارہ ثابت ہو گیا۔ امریکی اخبار لاس اینجلس ٹائمز کی تحقیقات کے مطابق ایک دہائی تک معائنہ کاری اور اربوں  خرچ کرنے کے باوجود ریاست ہائے متحدہ امریکہ کا ایک بڑا میزائل ڈیفنس پروگرام کامیابی کے بجائے کچھ اور ہی ثابت ہو گیا۔ بہرحال میزائل ڈیفنس ایجنسی (ایم ڈی اے) 2004ءسے شروع ہونے والے اس پروگرام کے تحت آئندہ ہفتے اپنی نویں مشق شروع کرنے جا رہی ہے، جس کی کامیابی پر شکوک و شبہات کا اظہار کیا جا رہا ہے۔ متعدد غلطیوں کے باعث میزائل ڈیفنس سسٹم کو خراب کر دیا گیا ہے،جس کے باعث اس کی صلاحیت پر بھی سوالات اٹھائے جانے لگے ہیںکہ آیا کسی بڑے حملہ کی صورت میں یہ اسے روک بھی سکے گا یا نہیں؟۔ اخبار کی رپورٹ کے مطابق پینٹاگون نے گراﺅنڈ مڈکورس ڈیفنس سسٹم (جی ایم ڈی) سے حاصل ہونے والی معلومات کی روشنی میں کہا ہے کہ مذکورہ پروگرام امریکی حکومت کی توقعات سے بھی زیادہ مسائل کا شکار ہے۔ مذکورہ پروگرام 1999ءمیں شروع کیا گیا، جس کے بعد 2004ءمیں اسے اپ گریڈ کیا گیا لیکن گزشتہ ایک عشرہ میں کئے جانے والے 8میں سے 5 ٹیسٹ ناکامی سے دوچار ہوئے۔ اب تمام متعلقہ لوگوں کی نظر 22جون کو ہونے والے ٹیسٹ پر لگی ہوئی ہیں، جو اس پروگرام کے مستقبل کا فیصلہ کرے گا۔ اس ضمن میں ایم ڈی اے کے ڈائریکٹر جیمز سیرنگ نے کانگرس کو بتایا ہے کہ 22 جون کو ہونے والے ٹیسٹ سے وہ بہت زیادہ پُرامید ہیں کہ یہ کامیاب ہو گا کیوں کہ اس مرتبہ ایم ڈی اے سسٹم میں نئی چیزیں شامل کی گئی ہیں۔ اس پروگرام کو ازسرنوکامیاب بنانے کے لئے جیمز نے کانگریس سے 99.5 ملین ڈالر فراہم کرنے کا مطالبہ بھی کر دیا ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -