افغانستان نے آپریشن ’ضرب عضب ‘میں تعاون کی یقین دہانی کرائی، ڈرون حملے قابل مذمت ہیں: دفتر خارجہ

افغانستان نے آپریشن ’ضرب عضب ‘میں تعاون کی یقین دہانی کرائی، ڈرون حملے قابل ...
افغانستان نے آپریشن ’ضرب عضب ‘میں تعاون کی یقین دہانی کرائی، ڈرون حملے قابل مذمت ہیں: دفتر خارجہ

  

 اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک )ترجمان دفتر خارجہ تسنیم اسلم نے کہا ہے کہ طاہر القادری کو پاکستان آنے سے روکنے کیلئے طارق فاطمی کے کینڈین سفیر سے رابطے میں کوئی صداقت نہیں ہے، ڈرون حملوں کا شمالی وزیرستان آپریشن سے کوئی تعلق نہیں ، افغانستان نے ضرب عضب پر مکمل تعاون کی یقین دہانی کرائی ہے۔تفصیلات کے مطا بق ترجمان دفتر خارجہ تسنیم اسلم نے دفتر خارجہ میں ہفتہ وار بریفنگ کے دوران کہا کہ ڈرون حملوں کا شمالی وزیرستان آپریشن سے کوئی تعلق نہیں، حملے عالمی قوانین کے خلاف ہیںاور ان کی توثیق کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا، پاکستان نے ڈرون حملوں کیخلاف عالمی رائے عامہ ہموار کرنے کیلئے اقدامات کیے۔ تسنیم اسلم نے بتایا کہ سول اور عسکری سطح پر افغانستان سے رابطہ ہوا ہے اور افغان حکام نے شمالی وزیرستان میں جاری آپریشن 'ضرب عضب' کے حوالے سے مکمل تعاون کی یقین دہانی کرائی ہے۔ ترجمان کا کہنا تھا کہ طاہر القادری کو واپس آنے سے روکنے کے معاملے پر طارق فاطمی کے کینیڈین سفیر سے رابطے میں کوئی صداقت نہیں ہے ، طاہر القادری پاکستانی شہری بھی ہیں ، پاکستان آنے سے روکنے کے حوالے سے قوانین کا ان پر اطلاق نہیں ہوتا۔ تسنیم اسلم کا کہنا تھا کہ پاک بھارت جامع مذاکرات کے حوالے سے بھارتی حکام سے رابطے میں ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ چین کی جیلوں میں 281 پاکستانی قید ہیں، ان پر منشیات سمگلنگ، قتل اور غیر قانونی قیام کے الزامات ہیں۔

مزید :

اسلام آباد -اہم خبریں -