کینیا میں ’گورے ‘کی قیادت میں دہشت گرد حملہ

کینیا میں ’گورے ‘کی قیادت میں دہشت گرد حملہ
کینیا میں ’گورے ‘کی قیادت میں دہشت گرد حملہ
کیپشن: kenya

  

نیروبی (مانیٹرنگ ڈیسک) کینیا میں اتوار  کو 60 لوگوں کو ہلاک کرنے والے شدت پسندوں کے بارے میں انکشاف ہوا ہے کہ ان کی قیادت ایک انگریز کر رہا تھا۔ ساحلی قصبے مپیکٹنی میں ہونے والے حملے کے بارے میں بتایا گیا ہے کہ یہ صومالی شدت پسند گروپ الشباب کی طرف سے کیا گیا تھا۔ عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ حملہ آوروں کا لیڈر ایک گورا تھا جو کہ انگریزی اورعربی زبان فرفر بولتے ہوئے ہدایات جاری کر رہا تھا۔ اخبار ٹیلی گراف کو ایک مقامی استاد، جو کہ خود بھی بہت اچھی انگریزی بول رہا تھا، نے بتایا کہ حملہ آوروں کا لیڈر برطانوی لہجے میں بہترین انگریزی بول رہا تھا۔ شدت پسندوں نے مپیکٹنی میں حملے کے دوران 49 لوگوں کو ہلاک کیا اور پھر 24 گھنٹے بعد قریبی گاﺅں پورومکو پر حملہ کر کے مزید درجن بھر لوگوں کو ہلاک کر دیا۔ صومالی شدت پسندوں کا کہنا ہے کہ وہ کینیا کو صومالیہ میں فوج بھیجنے کی سزا دے رہے ہیں کیونکہ یہ فوج صومالیہ میں ان کے خلاف کارروائی کر رہی ہے۔

مزید :

انسانی حقوق -