لاہورچیمبر: پروگریسو‘ کسٹمز ایجنٹس اورآزادگروپ مل کر الیکشن لڑینگے

لاہورچیمبر: پروگریسو‘ کسٹمز ایجنٹس اورآزادگروپ مل کر الیکشن لڑینگے

  

لاہور(کامرس رپورٹر)لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ اندسٹر ی کے آئندہ انتخابات میں پر وگریسو ،کسٹمزایجنٹس ،اور آزاد گروپ نے یکجان ہو کر الیکشن لڑ نے کا اعلان کر دیا۔گذ شتہ روز پر و گر یسو اینڈ کسٹمز ایجنٹس ایسوسی ایشن الائنس کے چےئر مین خالد عثمان ،صدر چوہدری محمد امجد ،سردار عثمان غنی ،راجا حسن اختر ،عبدالودد علوی ،محمد اعجاز تنویر ،طا ہر ملک ،ساجد عزیزمیر ،مقصود عالم بٹ ،ظفر حمد سعید ،چوہدری ارشد ،سمیت لاہور کے اہم صنعت کاروں اور تاجر رہنماؤں نے لاہور پر یس کلب میں پر یس کانفر نس کر تے ہوئے چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے آئندہ الیکشن میں پر وگر یسو اینڈ لاہور بزنسمین فر نٹ الائنس کے نئے نام کے ساتھ ایک بینر تلے انتخابات لڑ نے کاا علان کر دیا ۔ان رہنماؤں کا کہنا تھا کہ لاہور کسٹمز ایجنٹس ایسوسی ایشن نے صنعت و تجارت کے تمام شعبوں کو ساتھ لے کر چلنے کی غرض سے اپنے گروپ کانام لاہور بز نسمین فرنٹ رکھ لیا ہے ماضی میں آزاد حیثیت سے لاہور چیمبر کے انتخابات میں حصہ لینے والے آزاد گروپ نے بھی رواں برس لاہور بزنسمین فرنٹ میں ضم ہو نے کا اعلان کیاہے جس کے باعث اس گروپ کو مزید تقویت ملی ہے پر وگر یسو اینڈ لاہور بزنسمین فر نٹ الائنس کے چےئر مین خالد عثمان ،صدر چوہدری محمد امجد ،سردار عثمان غنی ،راجا حسن اختر ،و دیگر نے اپنے خطاب میں کہا کہ لاہور چیمبر میں حکمران اتحاد نے چیمبر کو اپنی ذاتی جاگیر بنا رکھاہے جہاں ممبرز کے بنیادی حقو ق سلب کر کے اپنے عزیز واقارب کو فائدہ پہنچایا جا رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ حکمران اتحاد نے لاہور چیمبر کو کر پشن اور بد عنوانی کی اماجگاہ بنا رکھا ہے پر وگر یسو اینڈ لاہور بزنسمین فرنٹ الائنس نے اس کر پشن اور بد عنوانی کے خلاف گزشتہ برس لاہور چیمبر کے انتخابات میں اتر نے کا فیصلہ کیاتھا اور انتہائی کم وقت میں لاہور کی کاروباری برادری کی جانب سے 44فیصد ووٹوں کی شکل میں زبر دست پذیرائی حاصل ہوئی تھی اس مر تبہ پر وگر یسو اینڈ لاہور بزنسمین فرنٹ الائنس ایک بار پھر بھر پور عزم کے ساتھ لاہور چیمبر کے انتخابات میں حصہ لے گا اور چیمبر آٖ ف کامرس میں عام ممبر تاجروں کو بھی برابر کی سطح پر رکھے گا ۔ الائنس کے رہنماؤں نے کہا کہ وفاقی اور صوبائی بجٹ مین بینکوں سے کیش نکلوانے پر ٹیکس کی شرح 0.3فیصد سے بڑھا کر 0.6فیصد کر دی گئی ہے جس کے باعث کاروباری لاگت میں اضافہ ہوا ہے اسی طرح صوبائی حکومت نے گڈز ٹرانسپورٹ پر 16فیصد جنرل سیلز ٹیکس عائد کیا ہے رہی سہی کسر پنجاب حکومت نے درآمدات پر 0.9فیصد انفر اسٹر کچر ڈویلمپنٹ سیں لگا کر نکال دی ہے کاروبااری رہنماؤں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ توانائی کی قلت کے باعث صنعت و حر فت پہلے ہی مشکلات کا شکار ہین حکومت کو تمام نئے ٹیکسوں پر نظر ثانی کر نی چاہیے اور کاروباری طبقے کو زیادہ سے زیادہ ریلیف فراہم کر نا چاہیے۔

مزید :

کامرس -