کھجوروں کی قیمت میں 100سے 300روپے فی کلو تک کا اضافہ

کھجوروں کی قیمت میں 100سے 300روپے فی کلو تک کا اضافہ

  

کراچی(اکنامک رپورٹر) رمضان المبارک کی آمد کے باعث جگہ جگہ کھجوروں کے اسٹال سج گئے ہیں جبکہ مختلف اقسام کی کھجوروں کی قیمت میں 100 سے 300روپے فی کلو تک کا بھی اضافہ ہو گیاہے مگر موثر چیک اینڈ بیلنس نہ ہونے کے باعث بڑھتی ہوئی مہنگائی کی شرح پر قابو نہ پایاجاسکاہے۔ یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ فرزندان اسلام رمضان المبارک کے دوران افطار کے اوقات میں سنت نبوی کے پیش نظر روزہ افطاری کیلئے کھجوروں کو ترجیح دیتے ہیں جس کیلئے مارکیٹ میں امبر ،کلمی، عجوہ ،سفری ، بادامی ،ایرانی ، افغانی کھجوروں کے اسٹال بڑی تعداد میں سج گئے ہیں جہاں مختلف ذائقوں ، لذت اور معیار کی حامل کھجوروں کی فروخت کابھی آغاز ہو گیاہے۔ کھجوروں کی خریداری کے دوران اس کے نرخوں کے تناسب سے زیادہ تر فرزندان اسلام 150 سے 200روپے کلو تک کے نرخوں کی حامل پاکستانی ،ایرانی ، افغانی کھجوروں کی خریدکو ترجیح دے رہے ہیں کیونکہ اعلی معیار کی حامل بادامی ، عجوہ اور اسی نوعیت کی بعض دیگر اقسام کی کھجوروں کی قیمت اس قدر زیادہ ہے کہ غریب ، متوسط ، ملازم پیشہ ،سفید پوش افراد ان کھجوروں کو خریدنے کی استطاعت نہیں رکھتے۔ کھجوروں کے اسٹالز کے سروے کے دوران دوکانداران نے بتایاکہ چونکہ ہول سیل مارکیٹ میں انہیں کھجور مہنگے داموں فراہم کی جارہی ہے اس لئے وہ اپنا مناسب اور معقول منافع رکھ کر کھجور فروخت کررہے ہیں۔انہوں نے کہاکہ چونکہ کھجور کھانا سنت نبوی اور ایک مکمل غذاہے لہذا رمضان المبارک کے دوران اس کی مانگ میں ہزاروں گنااضافہ ہو جاتاہے۔

انہوں نے کہاکہ اگر تھوک ڈیلرز انہیں مناسب نرخوں پر کھجور فراہم کریں تو وہ بھی انہیں کم نرخوں پر فروخت کرسکتے ہیں۔

مزید :

کامرس -