محکمہ اینٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ پنجاب کا رشوت میں ملوث ہونے کا انکشاف

محکمہ اینٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ پنجاب کا رشوت میں ملوث ہونے کا انکشاف

  

لاہور(ارشد محمود گھمن)کرپشن کا تدارک کرنے والے محکمہ اینٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ پنجاب کا رشوت میں ملوث ہونے کا انکشاف۔محکمہ میں کلیدی عہدوں پر پنجاب پولیس سے آئے ہوئے کرپٹ پولیس افسران براجمان ہیں جو اپنے پیٹی بھائیوں کی کرپشن بے نقاب کرنے کی بجائے انہیں تحفظ فراہم کرنے کیلئے سرگرداں ہیں بروقت انصاف نہ ملنے کیوجہ سے سائلین دربدر کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور ہیں ۔باوثوق ذرائع سے معلوم ہو ا ہے کہ اینٹی کرپشن ڈیپارٹمنٹ میں پنجاب پولیس کے تعینات پولیس افسران کو سرکل آفیسر ، ڈپٹی و اسسٹنٹ ڈائریکٹرزانویسٹی گیشن کی پوسٹوں پر تعینات کر دیا گیا ہے۔پنجاب پولیس کی کرپشن کیخلاف اینٹی کرپشن کو دی جانیوالی درخواست گزاروں اور دیگر سائلین کو اینٹی کرپشن کے اہم عہدوں پر فائز عملہ بیوقوف بنا کر انہیں اپنے دفاتر کے بار بار چکر لگوا کر سارے محکمہ کی بدنامی کا باعث بنے ہوئے ہیں یہ کتنا بڑا المیہ ہے کہ ایک ایساصوبائی ادارہ جس سے کرپشن،رشوت خوری اور بد عنوانی جیسی لعنتوں میں ملوث سرکاری اہلکاروں کا محاسبہ کرنے،شفاف تحقیق و تفتیش کرنے ،کرپشن جیسے ناسور کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کا خادم اعلیٰ پنجاب کی طرف سے فرض سونپا گیا ہے اور وہ خود کرپشن کا گڑھ اور کرپٹ عناصر کی آمجگاہ بن چکا ہے ۔ذرائع نے یہ بھی بتایا ہے کہ پنجاب پولیس کے کرپٹ م،رشوت خور جس میں اہم پولیس افسران شامل ہیں ان کیخلاف دی جانیوالی درخواستوں کو ردی کی ٹوکری کی زینت کر دیا گیا ہے گو اس بات پر کہ انویسٹی گیشن آفیسر ان کرپٹ افسران کے ماتحت مختلف مقامات پر پنجاب پولیس میں ڈیوٹیاں سرانجام دے چکے ہیں ان کو خدشہ ہے کہ ان کیخلاف کارروائی کرنے پر وہ دوبارہ کہیں ان کی ماتحتی کا حصہ نہ بن جائیں جس کیوجہ سے اینٹی کرپشن ڈیپارٹمنٹ میں تعینات آفیسر پنجاب پولیس کے اعلیٰ افسران کیخلاف کارروائی کرنے اور ان کو نوٹس جاری کرنے سے ہچکچاہٹ محسوس کرنے لگے ہیں ۔الٹا اپنی پولیس افسران کے سامنے کارروائیاں ڈالنے کیلئے شکایات کنندہ کی دی جانیوالی درخواستوں کو ردی کی ٹوکری کی زینت کر دیا جاتا ہے جو کہ درخواست گزار مایوس ہو کر کرپٹ عناصر کا پیچھا کرنا چھوڑ دیتے ہیں جس کی ملی بھگت سے معاشرے میں کرپشن کا بازار خوب گرم ہے۔جب اس حوالے سے ترجمان اینٹی کرپشن حامد ستار سے بات کی گئی تو انہوں نے اس معاملے سے مکمل لاعملی کا اظہار کیا۔

مزید :

صفحہ آخر -