سعودی عرب میں مقیم غیر ملکیوں کیلئے انتہائی ضروری معلومات ،حکومت کا اہم ترین فیصلہ

سعودی عرب میں مقیم غیر ملکیوں کیلئے انتہائی ضروری معلومات ،حکومت کا اہم ...
سعودی عرب میں مقیم غیر ملکیوں کیلئے انتہائی ضروری معلومات ،حکومت کا اہم ترین فیصلہ

  

ریاض (مانیٹرنگ ڈیسک) سعودی محکمہ پاسپورٹ کی طرف سے چار نئی الیکٹرانک خدمات متعارف کروائی جا رہی ہیں جن میں غیر ملکیوں کے لئے اقامہ میں تبدیلی کر کے ایک نئے کارڈ کا اجراءبھی شامل ہے جسے اقامتی شناختی کارڈ (resident identity card) کا نام دیا جائے گا۔

مزیدپڑھیں:ملک میں غیر ملکیوں کی حالت زار،سعودی حکومت نے انتہائی سخت موقف اپنا لیا 

”سعودی گزٹ“ کے مطابق جوازات کی خدمات سے استفادہ کرنے والوں کے لئے یہ بھی ضروری قرار دیا گیا ہے کہ وہ ”واصل“ میل باکس حاصل کریں تا کہ محکمہ ان کے گھر پر خدمات فراہم کر سکے۔ ان خدمات کا آغاز ہجری سال کے آغاز، اکتوبر، سے کیا جائے گا۔ زوالقعدہ کے آغاز سے محکمہ پاسپورٹ تمام کمپنیوں اور اداروں کے اہلکاروں کے اپنے دفاتر میں دورے بند کر دے گا کیونکہ خدمات الیکٹرانک طریقے سے فراہم کی جائیں گی اور ملازمین کے شناختی کارڈ ان کی کمپنیوں اور اداروں کو ڈاک کے زریعے بھیجے جائیں گے۔ محکمہ پاسپورٹ کا یہ بھی کہنا ہے کہ ایگزٹ/ ری اینٹری ویزا پر مملکت سے باہر جا کر مقررہ وقت کے اندر واپس نہ آنے والوں کو تین سال تک مملکت میں داخلے کی اجازت نہ ہوگی۔

نئے اقامتی شناختی کارڈ کے متعلق بتایا گیا ہے کہ یہ پانچ سال تک کار آمد ہو گا اور کسی مخصوص شعبے میں غیر ملکی افراد کی شناخت ثابت کرے گا۔ اس کارڈ پر غیر ملکی فرد کا نام، پیدائش کی تاریخ، پیشہ، قومیت، مذہب، آجر کا نام، اور ورک پرمٹ کا نمبر درج ہوگا (اگر یہ دستیاب ہوگا)۔

اقامتی شناختی کارڈ میں دو نمایاں تبدیلیاں متعارف کروائی گئی ہیں۔ پہلی عمومی نوعیت کی ہے جو کہ اس کی شکل سے متعلق ہے جبکہ اس کا نام ”ریذیڈنس پرمٹ“ سے بدل کر ”ریذیڈنس آئڈینٹٹی کارڈ“ کر دیا گیا ہے۔ دوسری تبدیلی یہ ہے کہ اس پر کارڈ کے خاتمے یعنی ایکسپائری کی تاریخ درج نہیں کی گئی ہے۔ رواں سال اکتوبر سے نئے الیکٹرانک اقامتی کارڈ کے اجراءکے پہلے مرحلے کا آغاز ہو گا۔

مزید :

بین الاقوامی -