جنرل راحیل شریف کو معتبر نظر سے دیکھتے ہیں، بیان واپس نہیں لیں گے: پیپلز پارٹی

جنرل راحیل شریف کو معتبر نظر سے دیکھتے ہیں، بیان واپس نہیں لیں گے: پیپلز ...
جنرل راحیل شریف کو معتبر نظر سے دیکھتے ہیں، بیان واپس نہیں لیں گے: پیپلز پارٹی

  

اسلام آباد ( مانیٹرنگ ڈیسک ) پاکستان پیپلز پارٹی کی جانب سے سیاسی رہنماﺅں کا اجلاس منعقد کیا گیا جس میں آصف علی زرداری کی جانب سے پاک فوج کے خلاف دیے گئے بیانات کے حوالے سے مشاورت کی گئی ہے ۔

اجلاس کے بعد پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنماءشیری رحمان اور قمر الزمان کائرہ کی جانب سے میڈیا کو بتایا گیا ہے کہ ان کی جماعت جنرل راحیل شریف کو معتبر نظر سے دیکھتی ہے اور آصف علی زرداری کا بیان جنرل راحیل شریف نہیں بلکہ سابق آمروں کے لیے تھا ۔ میڈیا سے بات کرتے ہوئے دونوں رہنماﺅں کا کہنا تھا کہ آج کے اجلاس میں آصف علی زرداری کی جانب سے دیے گئے بیان پر غور کیا گیا جس میں آصف علی زرداری نے رہنماﺅں کو اپنے بیان کے پس منظر سے آگاہ کیا ۔ انہوں نے مزید واضح کیا کہ پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین کے بیان پر کسی جماعت کو کوئی اعتراض نہیں ہے اس لیے وہ اپنا بیان واپس نہیں لیں گے ۔قمر زما ن کائرہ کا کہنا تھا کہ آصف علی زرداری کا بیان پیپلز پارٹی کی سوچ کا عکاس ہے اور آئندہ بھی پیپلز پارٹی مفاہمانہ اور ذمہ دارانہ سوچ کو ساتھ لے کر چلے گی ۔ انہوں نے مزید بتایا کہ پیپلز پارٹی کبھی بھی حالات کو خراب کرنے کی طرف نہیں لے کر گئی اور لیڈر بھی بیان دینے سے قبل کسی سے مشاورت نہیں کرتے ۔

قمر زمان کائرہ کا کہنا تھا کہ ملک دشمن قوتیں ملک کے حالات خراب کرنا چاہتی ہیں لیکن آج کے اجلاس میں بھی پاک فوج کی ان کے خلاف کاروائیوں کو سراہا گیا ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ کراچی میں رینجرز اپنے فرائض بہتر انداز میں پورے کر رہی ہے لیکن پاکستان کو درپیش مسائل اور سیاسی چیلنجز کے باعث نیشنل ایکشن پلان پر جلد از جلد عمل درآمد ہونا چاہیئے ۔

شیری رحمان کا کہنا تھا کہ آج کے اجلاس میں رینجرز اور پاک فوج کی کامیابیوں کو سراہا گیا ہے لیکن ضرب عضب کو تنقید کا نشانہ نہیں بنایا گیا ۔ مولانا فضل الرحمان کے حوالے سے شیری رحمان کا کہنا تھا کہ افطار ڈنر کا پروگرام پہلے سے طے تھا اور تمام دعوت نامے ایک ہفتہ پہلے ارسال کر دیے گئے تھے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ فضل الرحمان کو اجلاس میں شرکت سے روکا نہیں گیا تھا اور ان کا شرکت نہ کرنے کے اعلان اور پھر شرکت کرنا ذاتی معاملہ ہے ۔انہوں نے اس بات سے بھی انکار کیا کہ اجلاس میں چوہدری شجاعت حسین نے آصف زرداری کو اپنا بیان واپس لینے کا کہا ہے۔

مزید :

اسلام آباد -اہم خبریں -