بجٹ،کھیلوں کیلئے محختص رقم مقررہ اہداف حاصل کرسکے گی؟

بجٹ،کھیلوں کیلئے محختص رقم مقررہ اہداف حاصل کرسکے گی؟

ہر سال کی طرح اس مرتبہ بھی کھیل مطلوبہ رقم سے محروم رہے

کھیلوں کی ترقی کیلئے مناسب توجہ بنیادی ضرورت ہوتی ہے جب تک اس کے لئے بھرپوراقدامات نہ کئے جائیں کھیل ترقی کی مناز ل طے نہیں کرسکتے پاکستان میں ہر سال بجٹ سے قبل بلند و بانگ دعوے کئے گئے کہ کھیلوں کی ترقی و ترویج کیلئے بھاری رقم مختص کی جائے گی او ر اس کی خامیاں دور کرنے کے لئے اقدامات کئے جائیں گے مگر افسوس یہ دعوے صرف دعوے ہی رہ گئے اس مرتبہ بھی بجٹ میں کھیلوں کے لئے جو رقم رکھی گئی ہے وہ اونٹ کے منہ میں زیرہ دینے کے برابر ہے اور افسوس کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ اس طرح کھیل کبھی بھی ترقی نہیں کر سکتے جب تک کھلاڑیوں کو ان کے بنیادی حقو ق نہیں ملیں گے اس وقت تک وہ سنجیدگی سے کھیل پر توجہ بھی نہیں دیں گے پاکستان میں کھیلوں کی زوال پذیری کی سب سے بڑ ی وجہ ان پر پیسوں کا کم خرچ ہونا ہے اول تو جتنا بجٹ مختص کیا جاتا ہے وہ ہی کم ہوتا ہے لیکن اس میں بھی اعلی عہدے داران ہیر پھیر کرلیتے ہیں اور وہ پیسہ بھی کرپشن کی نذر ہوجاتا ہے ایسی صورتحال میں کھیلوں کی ترقی کاخواب کبھی پورا نہیں ہوسکتا ہاکی قومی کھیل ہے لیکن اس کے ساتھ ہمیشہ سے ہی سوتیلا سلوک کیا گیا ہے اس کھیل کی ترقی اس وقت سب سے اہم ضرورت ہے اور اسی صورت میں پاکستان ایک مرتبہ دوبارہ اس کھیل میں عروج حاصل کرسکتا ہے جب اس کھیل کی ضروریات کو مدنظر رکھتے ہوئے اس پر خرچ کیاجائے حکمران جس طرح سے دیگر شعبوں پرپیسے خرچ کررہے ہیں ان کو کھیلوں پر بھی اسی طرح سے بجٹ میں ایک کثیر رقم رکھنے کی ضرورت ہے تاکہ پاکستان میں کھیل ترقی کی جانب گامزن تو ہوسکیں ۔پنجاب کے مالی سال 2016-17کے بجٹ میں کھیلوں کے لئے پانچ ارب روپے مختص کیئے گئے ہیں جو کہ پچھلے سال کے مقابلہ میں دو گنا ہیں ۔صوبائی وزیر خزانہ ڈاکٹر عائشہ غوث پاشا نے پنجاب اسمبلی میں بجٹ تقریر کے دوران بتایا کہ آئندہ مالی سال کھیلوں کے بجٹ میں گزشتہ سال کے مالی بجٹ کے مقابلہ میں 100فیصد اضافہ ہوا ہے، بجٹ میں صوبہ میں کھیلوں کی جاری سکیموں کے لئے 2ارب 90کروڑ روپے اور نئی سکیموں کے لئے 2ارب 10کروڑ روپے رکھے گئے ہیں ۔نئے بجٹ میں حکومت پنجاب کی نئی سکیموں میں سرگودھا ،فیصل آباد،ملتان میں سپورٹس کمپلیکس کا قیام،نشتر پارک سپورٹس کمپلیکس لاہور میں ملٹی مقاصد کے لئے پارکنگ پلازہ کی تعمیر جس میں کھلاڑیوں کے لئے انٹرنیشنل ہوسٹل ،فائیو سٹا ر ہوٹل اور میوزیم شامل ہوگا ۔ ساہیوال سپورٹس کمپلیکس کی اپ گریڈیشن ،پنجاب میں نئی پلے فیلڈز اور ای لائبریریز کی ڈویلپمنٹ اور صوبہ میں اینڈو نمنٹ فنڈز کا قیام شامل ہے ۔نئے صوبائی بجٹ میں 2016-17کے لئے جو اہداف رکھے گئے ہیں ان میں بہالپور ،بھکر ،ڈیرہ غازی خان ،ملتان ،ساہیوال ،مظفر گڑھ اور رحیم یار خان میں ای لائبریریز کی تکمیل شامل ہے ۔لاہور میں 26پلے فیلڈز اور پنجاب کے مختلف اضلاع میں قائم جیمنیزئم میں مذید سہولیات کی 42سکیموں کی تکمیل شامل ہے ۔ پنجاب حکومت کے ویژن میں صوبہ کی تمام تحصیلوں ،ڈسٹرکٹس ،ڈویژن اور صوبائی سطح پر انٹرنیشنل معیار کا کھیلوں کا انفراسٹرکچر قائم کرنا ہے جس سے باصلاحیت کھلاڑیوں اور یوتھ کو ٹریننگ دے کر صحت مندانہ سرگرمیوں میں مشغول کیا جاسکے۔پنجاب حکومت کا مقصد ہے کہ صوبہ میں کھیلوں کے کلچر اور صحت مندانہ سرگرمیوں کو ترقی دی جائے اور سٹیٹ آف دی آرٹ سہولتوں کو ڈویلپ کیا جائے ۔صوبہ میں کھیلوں کی ترقی کے لئے پالیسیاں بنانا ،انٹرنیشنل معیار حاصل کرنا اور نئے سٹینڈر قائم کرنا جسکی پوری دنیا پیروی کرے ۔تما م اضلاع میں سپورٹس اکیڈمیز قائم کرکے کھیلوں کے ویٹرنز کو نوجوانوں کو ٹریننگ دینے کے لئے مشغول کرے ۔ باصلاحیت کھلاڑیوں ،کوچز ،سپورٹس ویٹرنز کو وظیفہ دینے اور غیر ممالک میں کھلاڑیوں کی تربیتی کے لئے سپورٹس انڈونمنٹ فنڈ کا قیام ، ۔پنجاب حکومت کا مقصد ہے کہ کھیلوں کی سرگرمیوں میں زیادہ سے زیادہ لوگوں کا مشغول کرنا ،نوجوانوں کو نٹرنیشنل ایونٹس کے لئے تیار کرنا ،کھیلوں کے موجودہ انفراسٹرکچر کی بحالی اور اپ گریڈیشن کرنا اور گاؤں سے صوبے تک صحت مند سرگرمیوں کو فروغ دینا ہے۔پنجاب حکومت کی طرف سے کھیلوں کے لئے بھاری رقم مختص کرنے پر کھیلوں کے حلقوں میں خوشی کی لہر دوڑ گئی اور انہوں نے اسے صوبہ میں کھیلوں کی ترقی کے لئے اہم قدم قرار دیا ۔مسلم لیگ ن کے ایم این اے میاں جاوید لطیف اور ایم پی اے عارف سندھیلہ کا کہنا تھا کہ پنجاب حکومت کی طرف کھیلوں کی ترقی کے لئے مختص کی جانے والی بھاری رقم کے مختص کیئے جانے کے مثبت نتائج سامنے آئیں گے اور قومی ٹیموں کو نیا ٹیلنٹ ملے گا ۔

مزید : ایڈیشن 1