امن کو فروغ دینے کیلئے موٹر سائیکل پر پاکستان کا چکر لگاؤں گا ، رانا شاہد

امن کو فروغ دینے کیلئے موٹر سائیکل پر پاکستان کا چکر لگاؤں گا ، رانا شاہد

لاہور(اسد اقبال)امریکہ میں نائن الیون کیا ہوا پاکستان سمیت دنیا کے بیشتر ممالک میں سیاحت کا بیڑہ غرق ہو گیا ۔ٹورازم پر دہشت گر دی غالب آگئی اور سیاحوں کو اس کا خوب خمیازہ بھگتنا پڑا جبکہ سیاحت کے فروغ کے لیے کی جانے والی کو ششیں بھی دم توڑنے لگی اور ٹورسٹ اس انتہا پسندی کی ذد میں آ کر معاشی طورپر قتل ہوتے دکھائی دیے ۔ہم سیاحت کو "امن"کے فروغ کے لیے سب سے بڑے ہتھیار کے طور پر استعمال کر سکتے ہیں اور میں اس مقصد کے تحت (رائیڈ فار پیس )مشن کے نام پر 22جون کو پاکستان بھر میں موٹر سائیکل پر ٹور کر نے جارہا ہوں ۔جس کا مقصد ملکی سیاحت کا فروغ اور انٹر نیشنل سطح پر امن کا پیغام پہنچانا ہے ۔رانا شاہدجو پیشہ کے اعتبار سے ٹورسٹ گائیڈ ہیں جنھوں نے پاکستان میں جاپان ، ملائشیا، بنکاک اور سنگاپور سمیت دیگر ممالک کے سیاحوں کو پاکستان کی خوبصورتی کے منفر د رنگ دکھائے ہیں بلکہ انٹرنیشنل سطح پر بھی بطور گائیڈ فرائض سر انجام دے چکے ہیں ۔معروف ٹورسٹ رانا شاہد نے گزشتہ روز "روزنامہ پاکستان "کو خصوصی انٹرویو میں بتایا کہ میں نے اپنی زندگی میں پاکستان میں سیاحت کا عروج بھی دیکھا اور زوال بھی ۔پاکستان قدرتی حسن سے مالا مال اور چارموسموں کی نعمت سے وابستہ ہے ۔دنیا میں کئی ایک ایسے ممالک ہیں جو صرف سیاحت کے بل بو تے پر اپی اکانومی کو چلا رہے ہیں ۔ پاکستا ن میں امن کی فضا ء قائم ہے اور اس پیغام کو بین الاقوامی سطح پر پہنچانے کے لیے رائیڈ فار پیس کے تحت پنجاب سے ہوتے ہوئے شاہراہ ریشم ،کے پی کے سے سندھ اور شمالی علاقہ جات سے ہوتے ہوئے سات بڑے پاسز پر امن کا پیغام پہنچاؤ نگا۔ انھوں نے کہا کہ پاکستان ٹورازم کے لیے بہت اچھا ملک ہے جہاں پر قدرت نے خوبصورتی کے عجب رنگ بکھیر رکھے ہیں ۔جہاں اونچے پہاڑ ، چٹیل میدان ، صحراء، سمندر اور شمالی علاقہ جات میں واقع خوبصورت نظارے ہر دیکھنے والی آنکھ کو بہاتے ہیں ۔ رانا شاہد کا کہنا تھا کہ میں پاکستان میں سیاحت کا فروغ چاہتا ہوں جس کے لیے پاکستان ٹور ازم کے حوالے سے موثر ملک ہے ۔جہاں چار مو سم ہیں جو اہمیت کے حامل ہیں۔انھوں نے کہا کہ میں مو ٹر سائیکل پر پاکستان بھر کا ٹور کرنے کا مقصد سیاحت برائے امن ہے ۔جس کے لیے لوگوں کا اعتماد بحال کر نا ہے ۔میرا سفر دس ہزار کلو میٹر سے زائد ہو گا جس کے لیے میں نے خصوصی طور پر یو نیفار م ، سیفٹی کٹس اور ٹو لز سمیت مو ٹر سائیکل کو خصوصی طور پر تیار کیا ہے ۔ایک سوال کے جواب میں انھوں نے کہا کہ موٹر سائیکل پر ملک بھر کا ٹور کر نے کا فیصلہ اس لیے کیا کہ مو ٹر سائیکل جہاں پہاڑی علاقوں میں باآسانی جا سکتی ہے وہیں اونچے نیچے اور تنگ راستوں پر سفر کرنا بہتر ہے ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1