وہ جنگی طیارہ جسے اُڑانے والے پائلٹ کے صرف ہیلمٹ کی قیمت ہی 4 کروڑ روپے

وہ جنگی طیارہ جسے اُڑانے والے پائلٹ کے صرف ہیلمٹ کی قیمت ہی 4 کروڑ روپے
 وہ جنگی طیارہ جسے اُڑانے والے پائلٹ کے صرف ہیلمٹ کی قیمت ہی 4 کروڑ روپے

  

واشنگٹن (نیوز ڈیسک) امریکا کا نیا جنگی طیارہ F-35 لائٹننگ 2جب اگلے سال اپنی پہلی آفیشل اڑان بھرے گا تو یہ دنیا کا جدید ترین اور مہنگا ترین جنگی جہاز ہو گا ، لیکن اس کی سب سے منفرد اور حیرت انگیز بات وہ ہائی ٹیک ہیلمٹ ہو گا جو اس طیارے کو اڑانے والا پائلٹ پہنے گا۔ نیوز سائٹ ائیرفورس ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق یہ ہیلمٹ پائلٹ کو مطلوبہ معلومات تک تیز ترین رسائی دے گا اور اس میں لگے سپیشل کیمرے اسے جہاز کے پیندے میں سے نیچے دیکھنے کی صلاحیت بھی فراہم کریں گے۔ صرف اس ہیلمٹ کی قیمت 4 لاکھ ڈالر (تقریباً 4 کروڑ پاکستانی روپے ) ہے ، جو کہ 16 F-جیسے جہازوں میں استعمال ہونے والے ہیلمٹ سے تقریباً 4 گنا زیادہ ہے۔ ائیرفورس ٹائمز کے مطابق اسلحہ ساز کمپنی لاک ہیڈ مارٹن سے F35 کے ہیلمٹ خریدنے پر ہی تقریباً ایک ارب ڈالر (تقریباً ایک کھرب پاکستانی روپے ) خرچ ہوں گے۔ یہ ہیلمٹ جہاز کی باڈی میں لگے 6 کیمروں کو استعمال کرے گا جن کی مد د سے یہ پائلٹ کو جہاز کے اردگرد 360 ڈگری کے زاویے پر ہر سمت کے مناظر دکھا سکے گا۔ اس ہیلمٹ کے ذریعے پائلٹ رات کی تاریکی میں بھی ہر شے کو واضح طور پر دیکھ سکے گا جبکہ اہم ترین معلومات مثلاً طیارے کی بلندی ، رفتار اور اہداف، ہیلمٹ کے شیشے میں پائلٹ کو اپنی آنکھوں کے سامنے نظر آئیں گے۔ اس قیمتی ترین ہیلمٹ کے کچھ مسائل بھی ہیں، مثلاً اس کا نسبتاً زیادہ وزن پائلٹ کیلئے ایمرجنسی صورتحال میں طیارے سے ایجیکشن کو خطرناک بنا سکتا ہے۔ اس قسم کے مسائل کے حل کیلئے کام جاری ہے اور اُمید کی جارہی ہے کہ ایک سے ڈیڑھ سال کے دوران نیا اور قدرے ہلکا ہیلمٹ تیار ہو جائے گا۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر