ووٹرز ڈیٹا افشا نہیں ہوا، ڈیٹا لیک ہونے کے حوالے سے ابھی تک تحریک انصاف کی درخواست نہیں ملی ، نادرا سے وضاحت انتخابی فہرستوں سے متعلق رپورٹس اجازت کے بغیر اخبار میں شائع ہونے پر مانگی گئی : الیکشن کمیشن

ووٹرز ڈیٹا افشا نہیں ہوا، ڈیٹا لیک ہونے کے حوالے سے ابھی تک تحریک انصاف کی ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


اسلام آباد (سٹاف رپورٹر ،مانیٹرنگ ڈیسک ،نیوز ایجنسیاں )الیکشن کمیشن نے بعض ٹی وی چینلز پر نشر ہونے والی اس خبر کے تاثر کو غلط قرار دیاہے کہ پاکستان تحریک انصاف کی درخواست پر الیکشن کمیشن نے ووٹرز کا ڈیٹا افشا ہونے پر نادرا سے وضاحت طلب کی ہے۔الیکشن کمیشن کا کہنا ہے کہ اس سلسلے میں وضاحت کی جاتی ہے کہ نادراکے حوالے سے تاحال تحریک انصاف کی کوئی درخواست الیکشن کمیشن کو موصول نہیں ہوئی۔الیکشن کمیشن نے نادرا کو جو خط لکھا تھا وہ کسی اور حوالے سے تھا جس میں نادرا سے پوچھا گیا تھا کہ وہ وضاحت کرے کہ ایک اخبار میں مورخہ 25 اور 28 مئی 2018 کو انتخابی فہرستوں سے متعلق اعداد و شمار الیکشن کمیشن کی اجازت کے بغیر کیسے شائع ہوگئے؟واضح رہے کہ ڈان اخبار میں 25 اور 28 مئی کو انتخابی فہرستوں سے متعلق رپورٹس شائع ہوئی تھیں۔الیکشن کمیشن نے وضاحت کی کہ ووٹرز کا خفیہ ڈیٹا افشا نہیں ہوا، ووٹرز کی فہرستوں سے متعلق معلومات افشا ہوئیں۔الیکشن کمیشن کے مطابق نادرا نے ووٹر لسٹ کے حوالے سے صوبائی سطح پر کچھ مسلم اور غیر مسلم افراد کے اعداد وشمار افشا کیے تھے جس پر الیکشن کمیشن نے نادرا سے وضاحت طلب کی۔واضح رہے کہ اس سے قبل گزشتہ ماہ مئی میں الیکشن کمیشن نے ووٹرز کا ڈیٹا افشا ہونے پرچیئرمین نیشنل ڈیٹا بیس اینڈ رجسٹریشن اتھارٹی (نادرا) کو خط لکھا تھا۔ خط میں نادرا سے 31 مئی 2018 تک ووٹرز کی معلومات افشا کرنے والوں کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا گیا تھا۔الیکشن کمیشن نے خط میں کہا تھا کہ نادرا حکام نے ووٹرز کا ڈیٹا غیر متعلقہ افراد کو لیک کیا، ووٹر سے متعلق معلومات الیکشن کمیشن کے پاس پہنچنے سے قبل ہی غیر متعلقہ افراد کے پاس پہنچ گئی۔نادرا یہ معلومات افشا کرنے والوں کے خلاف کارروائی کرے۔خط میں مزید کہا گیا کہ نادرا نے الیکشن کمیشن کے ساتھ کیے گئے معاہدے کی خلاف ورزی کی ہے،معاہدے کے مطابق نادرا ووٹرز کا ڈیٹا کسی سے شیئر نہیں کرسکتا، ووٹر سے متعلق معلومات افشا ہونے کے باعث انہیں غیر مجاز افراد کے ہاتھوں تک پہنچنے کے خدشات ہیں۔ایکسپریس نیوز سمیت بعض ٹی وی چینلز نے گزشتہ روز خبر نشر کی کہ ووٹرز کی تفصیلات منظر عام پر آنے کے بعد الیکشن کمیشن نے چیئرمین نادرا عثمان یوسف مبین کو خط لکھ دیا۔الیکشن کمیشن کی جانب سے لکھے گئے خط میں کہا گیا ہے کہ نادرا حکام نے ووٹرز کا ڈیٹا غیر متعلقہ افراد کو جاری کیا اور اس اقدام کے باعث ڈیٹا الیکشن کمیشن پہنچنے سے پہلے ہی غیر متعلقہ افراد کے پاس پہنچ گیا ہے۔خط میں کہا گیا ہے کہ معاہدے کے تحت نادرا ووٹرز کا ڈیٹا کسی سے شیئر نہیں کرسکتا اور نادرا نے ایسا کر کے الیکشن کمیشن کے ساتھ معاہدے کی خلاف ورزی کی ہے۔ الیکشن کمیشن نے چیئرمین نادرا سے مطالبہ کیا کہ ڈیٹا جاری کرنے والوں کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔یاد رہے کہ چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے حال ہی میں چیئرمین نادرا عثمان یوسف مبین کو عہدے سے ہٹانے کا مطالبہ کیا تھا اس حوالے سے الیکشن کمیشن جانے کا فیصلہ کیا تھا۔ذرائع کا بتانا ہے کہ عمران خان نے عثمان مبین کو عہدے سے ہٹانے کے لیے پٹیشن بھی تیار کرلی اور انہوں نے پارٹی رہنماؤں کو بھی چیئرمین نادرا کے خلاف آواز اٹھانے کی ہدایت کی تھی۔الیکشن کمیشن کا کہنا ہے کہ چیئرمین نادرا سے انتخابی ڈیٹا جاری کرنے کی وضاحت طلب کرنے کا تعلق تحریک انصاف کے مطالبے سے نہیں۔اپنے وضاحتی بیان میں الیکشن کمیشن نے کہا کہ نادرا کے ڈیٹا جاری کرنے کے معاملہ پر پی ٹی آئی کی درخواست موصول ہوئی اور نا اس وضاحت کا تعلق کسی سیاسی جماعت کے مطالبے سے ہے۔الیکشن کمیشن کے مطابق ڈیٹا لیک معاملے پر نادرا سے 31 مئی تک وضاحت طلب کی گئی تھی اور اب تک ووٹر فہرستوں کی تفصیلات پر وضاحت نہیں دی گئی۔دوسری جانب عمران خان کی جانب سے مسلم لیگ (ن) کو ڈیٹا فراہم کرنے کے الزام پر نادرا حکام کا کہنا ہے کہ نادرا نے کسی قسم کا ڈیٹا کسی بھی سیاسی جماعت کو نہیں دیا، دھاندلی کے الزامات بیبنیاد اور من گھڑت ہیں۔ترجمان نادرا کی جانب سے جاری بیان کے مطابق ادارے کا عام انتخابات کے انعقاد میں محدود کردار ہے، نادرا الیکشن کمیشن کی آئین کے تحت تکنیکی مدد کر رہا ہے۔ذرائع کے مطابق پی ٹی آئی نے نادرا چیئر مین کو ہٹانے کے لئے پٹیشن تیار کرلی۔ بابر اعوان نے عمران خان کو پٹیشن پر بریفنگ بھی دی ہے۔ چیئرمین نادرا پرمسلم لیگ (ن) کو الیکشن جیتنے میں مدد کے لئے ڈیٹا فراہم کرنے کا الزام عائد کیا گیاہے۔ پٹیشن میں موقف اختیار کیا جائے گا کہ چیئرمین نادرا کو سابق حکمراں جماعت نے تعینات کیا تھا اس لئے انکی موجودگی میں شفاف الیکشن نہیں ہو سکتا۔ انہیں عہدے سے ہٹایا جائے۔ تحریک انصاف کے رہنما بیرسٹر بابر اعوان نے چیئرمین نادرا کے خلاف پٹیشن تیاری کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ جلد الیکشن کمیشن میں چیئر مین ناررا کے خلاف پٹیشن دائر کریں گے۔
الیکشن کمیشن

مزید :

صفحہ اول -