ماضی میں ملکی معیشت سے متعلق مجرمانہ غفلت کا مظاہرہ کیا گیا،قوم نے مجموعی طور پر 30 ہزار ارب قرضہ ادا کرنا ہے،عمر ایوب

ماضی میں ملکی معیشت سے متعلق مجرمانہ غفلت کا مظاہرہ کیا گیا،قوم نے مجموعی ...
ماضی میں ملکی معیشت سے متعلق مجرمانہ غفلت کا مظاہرہ کیا گیا،قوم نے مجموعی طور پر 30 ہزار ارب قرضہ ادا کرنا ہے،عمر ایوب

  


اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) عمر ایوب نے کہا ہے کہ پاکستان کو عمران خان کی صورت میں لیڈر ملا جو چوروں کیخلاف ہے، ابھی تک ن لیگ نے نظریہ پاکستان کا کریڈٹ نہیں لیا، منتظر ہیں۔وفاقی وزیر عمر ایوب نے قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہاکہ شہباز شریف نے اپنی پارٹی پر خود کش حملہ کر دیا، قوم نے مجموعی طور پر 30 ہزار ارب قرضہ ادا کرنا ہے، گزشتہ حکومتوں نے 30 ہزار 846 ارب قرضہ لیا، 10 سال میں 24 ہزار ارب روپے قرضہ لیا گیا، اس سال 3 ہزار ارب قرضوں کے سود کی مد میں ادا کریں گے، 5500 ارب ریونیو اکٹھا کر کے دکھائیں گے، 2013 سے 2018 تک ملک میں کرنسی چھپائی میں 100 فیصد اضافہ ہوا۔

عمر ایوب کا کہنا تھا ماضی میں ملکی معیشت سے متعلق مجرمانہ غفلت کا مظاہرہ کیا گیا، دونوں پارٹیوں نے قرض لینے میں ایک دوسرے کو پیچھے چھوڑا، ملکی نظام کو بہتر کرنے کیلئے اقدامات کر رہے ہیں، گزشتہ حکومت نے زیادہ قرضے لیے اور نوٹ چھاپے جس سے افراط زر میں اضافہ ہوا، 10 سال میں برآمدات میں اضافہ کے بجائے کمی ہوئی، گزشتہ حکومت نے ڈالر کی قیمت کو مصنوعی سہارا دیا، ن لیگ کی فارن ایکس چینج پالیسی انتہائی غلط تھی۔

عمر ایوب نے کہا کہ ن لیگ نے مصنوئی طورپرڈالرکوسہارادینے کیلئے 24 ارب ڈالرخرچ کیے،تریموں پروجیکٹ کیلئے گیس خریداری کامعاہدہ ہی نہیں کیا،انہوں نے کہ اکہ پیپلزپارٹی کی حکومت 7 بارآئی ایم ایف کے پاس گئی،ن لیگ کے حکومت 3 بارآئی ایم ایف کے پاس گئی، انہوں نے کہا کہ کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ 20 ارب ڈالرپرہے،1999 میں غیرملکی قرضے 39 ارب ڈالرتھے،2008 میں غیرملکی قرضے 41 ارب ڈالرکوپہنچ گئے،2018 میں غیرملکی قرضے 96 ارب ڈالرتک پہنچ گئے،وزیر توانائی نے کہا کہ سویلین حکومت نے اخراجات میں 50 ارب کٹوتی کی،ن لیگ کی حکومت نے سارک کانفرنس کی گاڑیاں پی ایم سیکرٹریٹ میں لگادیں،2018 میں جس لوڈشیڈنگ کاسامناکرناپڑان لیگ اس کاجواب دے۔

مزید : اہم خبریں /قومی /علاقائی /اسلام آباد