وفاق نے سندھ کے 35ارب کم کر دیئے، گرفتاریوں کے باوجود سیشن جاری ہے:وزیراعلیٰ مراد علی شاہ

وفاق نے سندھ کے 35ارب کم کر دیئے، گرفتاریوں کے باوجود سیشن جاری ہے:وزیراعلیٰ ...
وفاق نے سندھ کے 35ارب کم کر دیئے، گرفتاریوں کے باوجود سیشن جاری ہے:وزیراعلیٰ مراد علی شاہ

  


کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کہاہے کہ ہم مشکلات اور گرفتاریوں کے باوجود بھی سیشن چلارہے ہیں، وفاق نے سندھ کے 35 ارب روپے کم کردئے ہیں، قومی اسمبلی میں تین دن تک کسی کو بھی بجٹ پر تقریر نہیں کرنے دی گئی مگر سندھ اسمبلی میں سب کو بات کرنے کا موقع دیا جارہاہے، وفاق کی جانب سے سندھ کو کبھی اسکے حصے کی رقم کی پوری  ادائیگی نہیں ہوئی، قسطوں میں فنڈز منتقل کئے جاتے ہیں، سندھ کے مالیاتی شیئر کیلئے وفاقی حکومت کو خط لکھ دیاہے۔

سندھ اسمبلی کے ایوان میں خطاب کرتے ہوئے وزیراعلی مراد علی شاہ نے  کہا کہ وفاق سے666ارب روپے ملنا تھے لیکن دس جون کو35ارب روپے کم کردئے گئے، ابھی تک سندھ کو492ارب ملے ہیں۔ دعا کرتا ہوں وفاق اپنے ٹارگٹ پورے کرے۔ وفاق کی جانب سے کبھی پورے پیسے نہیں دئے جاتے بلکہ قسطوں میں فنڈز فراہم کئے جاتے ہیں، فنڈز کی آخری قسط126ارب روپے کی آنی ہے۔ اپوزیشن نے ایوان میں ہنگامہ کیا اور میرا نام تبدیل کیا اس پر افسوس ہوا، ایسا نہیں ہونا چاہئے تھا۔ اپنے صوبے کو بدنام نہ کریں۔ سندھ اسمبلی میں اب تک42ارکان بجٹ پر بحث کرچکے ہیں، بدقسمتی سے قومی اسمبلی میں ایسا نہیں ہوسکا۔ ان شاء اللہ پانچ دن میں اپنی بحث مکمل کریںگے۔ مجھے بھی نام بگاڑنا آتا ہے مگر میری تربیت ایسی نہیں۔ ہم پر تنقید کریں اسکا خیرمقدم کریںگے۔ دیگر صوبوں اور قومی اسمبلی سے زیادہ ارکان سندھ اسمبلی میں بجٹ پر بات کرینگے۔ انہوںنے شکوہ کیا کہ اخبارات میں پروپیگنڈہ جاری ہے تاہم انہوںنے اسکی وضاحت نہیں کی۔ اپوزیشن و حکومتی بینچز کے شکرگزار ہیں انہوںنے بجٹ اجلاس میں دلچسپی ظاہر کی،ہم مشکلات اور گرفتاریوں کے باوجود بھی سیشن چلارہے ہیں، میرا خاندان سیاست میں رہاہے، ماضی میں کبھی ایسی حالت نہیں دیکھی، سوچنا ہوگا کہ یہ حالات کیوں ہیں

مزید : علاقائی /سندھ /کراچی