مسلم لیگ (ن) نے وزیراعظم کیخلاف تحریک عدم اعتماد کی حمایت کا عندیہ دیدیا

    مسلم لیگ (ن) نے وزیراعظم کیخلاف تحریک عدم اعتماد کی حمایت کا عندیہ دیدیا

  

اسلام آباد(آن لائن) تحریک انصاف میں متبادل وزیراعظم کیلئے لابنگ ہونا شروع ہو گئی۔ بہت سے لوگ عمران خان کی جگہ لینے کو تیار ہیں،وزیر اعظم کیخلاف عدم اعتماد کی تحریک آئی تو حمایت کریں گے،ملک میں فوری طور پر مڈٹرم الیکشن ہی مسائل کا واحد حل ہے۔ ان خیالات کا اظہار مسلم لیگ (ن) کے سینئر رہنما خواجہ اور رانا ثناء اللہ نے نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ خواجہ آصف نے کہا کہ حکومتی کارکردگی سے غیر مطمئن کئی لوگوں سے ہم رابطے میں ہیں، اب حکومت کی توڑ پھوڑ کا عمل شروع ہو چکا ہے، تحریک انصاف میں ایسے لوگ موجود ہیں جو وزیراعظم کی جگہ لینے کو تیار ہیں اور ان لوگوں نے اس کیلئے لابنگ کا سلسلہ بھی شروع کر لیا ہے۔ تحریک انصاف کے اپنے اراکین اسمبلی بھی ان سے نارا ض ہیں۔بعد ازاں مسلم لیگ (ن)کے رہنما رانا ثنا اللہ نے کہا ہے کہ سلیکٹڈ لوگ سلیکٹڈ فیصلے ہی کرتے ہیں۔ نواز شریف عدالت کی اجازت سے بیرون ملک علاج کیلئے گئے جبکہ نواز شریف فی الحال سیاسی سرگرمیاں شروع نہیں کرنا چاہتے اور وہ ابھی ڈاکٹروں کے مشورے پر عمل کر رہے ہیں۔ اخترمینگل نے حکومت سے علیحدگی کا فیصلہ اپنی پارٹی سے مشاور ت کے بعد کیا اور ہمیں اخترمینگل کے اس فیصلے کا علم نہیں تھا۔ وزیر اعظم عمران خان 4 ووٹوں کی اکثریت سے وزیر اعظم بنے تھے اور اب انہیں قومی اسمبلی سے اعتماد کا ووٹ لینا پڑیگا،رانا ثنا اللہ نے کہا وزیر اعظم کا انتقامی رویہ کورونا سے بڑا مسئلہ ہے،اپنے دورہ کراچی کے دوران وزیر اعلیٰ سے بھی ملنا گوارا نہیں کیا۔ وزیر اعظم کا رویہ جمہوری روایات کیلئے خطرنا ک ہے۔ مڈٹرم الیکشن کا مطالبہ کرتے ہوئے انہوں نے کہا ملک میں مڈٹرم الیکشن ہی مسائل کا حل ہے۔ نیب کی گرفتاریوں کا عمل غیر قانونی ہے، وزیر اعظم نیب کے ذریعے حزب اختلاف سے انتقام لے رہے ہیں اور حکومت چیئرمین نیب کو بلیک میل کر کے مرضی کے کام کرا رہی ہے۔ شہباز شریف کیخلاف بھی انتقامی کارروائی کی جا رہی ہے۔ سلیکٹڈ لوگ سلیکٹڈ فیصلے ہی کرتے ہیں، سلیکٹڈ لاک ڈاؤن ملک کو بھاری پڑے گا۔

مسلم لیگ ن

مزید :

صفحہ اول -