غلط فیصلوں کے باعث کورونا وباء بے قابو،ملک گیر لاک ڈاؤن ناگزیر،بلاول بھٹو

    غلط فیصلوں کے باعث کورونا وباء بے قابو،ملک گیر لاک ڈاؤن ناگزیر،بلاول بھٹو

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر) چیئرمین پاکستان پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے وفاقی حکومت سے ایک بار پھر لاک ڈاؤن لگانے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ حیرت کی بات ہے کہ اتنی زیادہ اموات ہونے کے بعد بھی عمران خان لاک ڈاؤن نہ کرنے کی ضد پر اڑے ہوئے ہیں،اپوزیشن اگر بری لگتی ہے تو عمران خان لاک ڈاؤن کے حوالے سے ڈبلیو ایچ او یا ڈاکٹروں کی رائے کو سن لیں،وزیراعظم کے بعض بیانات سے اندازہ ہوا کہ انہیں علم ہی نہیں این ایف سی ایوارڈ کیا ہے،ٹِڈی دل کی وجہ سے اگر ملک میں قحط پڑا تو اس تباہی کے ذمہ دار عمران خان ہوں گے۔جمعرات کو پارٹی کے سینئر رہنماؤں نیربخاری، فرحت بابر،شیری،راجہ پرویزاشرف، رضا ربانی،نوید قمر،مولا بخش چانڈیو اور نفیسہ شاہ سے ویڈیو کانفر نس میں بلاول بھٹو زرداری نے ہدایت کی کہ پارٹی رہنما پارلیمان اور عوام میں جاکر وفاقی حکومت کی نااہلی سے متعلق آگاہی دیں،پارٹی کے سینئر رہنما حکومتی نااہلیوں کو سامنے لانے کے حوالے سے موثر کردار ادا کریں۔ عمران خان کے غلط فیصلوں کی وجہ سے آج ملک میں کرونا وائرس کی وبا بے قابو ہوچکی ہے۔ عمران خان لاک ڈاؤن نہ کرنے کی ضد پر اڑے ہوئے ہیں،عالمی ادارہ صحت کی وارننگ کو بھی عمران خان نے چٹکیوں میں اڑادیا۔بجٹ میں صحت اور زراعت کے شعبوں کو نظر انداز کرکے ملک کو خطرناک حالات کے حوا لے کردیا گیا۔ وزیراعظم کے بعض بیانات سے اندازہ ہوا کہ انہیں علم ہی نہیں کہ این ایف سی ایوارڈ کیا ہے،اگر ملک کا انتظامی سربراہ صوبوں میں وسائل کی تقسیم کی اہمیت تک سے لاعلم ہے تو ملک کیسے چلے گا؟ایک وزیراعلی کے آئینی اختیارات کو وزیراعظم کی جانب سے ڈکٹیٹر کے اختیارات کے برابر قرار دینا افسوسناک ہے۔ اٹھارویں آئینی ترمیم کیخلاف عمران خان کے بیانات تشویشناک ہیں،عمران خان کے 18ویں آئینی ترمیم کیخلاف بیانات دراصل 73 کے دستور پاکستان پر حملے ہیں۔انکامزید کہنا تھا عمران خان کو شاید اندا ز ہ ہی نہیں ٹِڈی دل کے حملے اس وقت ملک کا انتہائی سنگین بحران ہیں۔ انہوں نے حکومتی نااہلیوں، عوام دشمن بجٹ اور موجودہ سیاسی صورتحال پر جلد اے پی سی بلانے کا بھی عندیہ دیا۔

بلاول بھٹو

مزید :

صفحہ اول -