باچا خا ن یونیورسٹی چارسدہ ٹیچرز بیوٹا کا اجلاس

باچا خا ن یونیورسٹی چارسدہ ٹیچرز بیوٹا کا اجلاس

  

چارسدہ (بیورورپورٹ)باچاخان یونیورسٹی چارسدہ ٹیچرز ایسوسی ایشن (بیوٹا) کا اجلاس ذیرصدارت ڈاکٹر اکرام اللہ منعقد ھوا جس میں کا بینہ کے تمام اراکین نے بذریعہ ویڈیو لنک شرکت کی۔کابینہ نے خیبر پختونخواہ حکومت کی جانب سے چھ سرکاری جامعات کے وأئس چانسلرز کے مدت ملازمت میں غیر قانونی توسیع رد کرنے پر جناب گورنرشافرمان خان، وزیراعلی محمود خان، چیف سیکرٹری ڈاکٹر کاظم نیاز خان، منسٹر ھائیر ایجو کیشن خلیق رحمان خٹک اور سیکرٹری ھائر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ محمود حسن یوسفزی کا دلی شکریہ ادا کیا اور اسے احسن اقدام قرار دیا۔جنرل سیکریٹری بیوٹا ڈاکٹر محمد شکیل نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ سینئر ترین پروفیسر ڈاکٹر منظور احمد مشوانی کو خیبر پختونخواہ یونیورسٹی ایکٹ کے سیکشن(۱۲ اے) کے مطابق پرووائس چانسلر تعینات کیا جائے جو نئے وائس چانسلر کے أنے تک ایکٹنگ وائس چانسلر کے طور پر خدمات سرانجام دے سکے، یونیورسٹی میں ۸ جون سے جاری انتظامی خلا کو پر کیا جا سکے اور یونیورسٹی کو غیر یقینی اور بے چینی کے صورتحال سے نکالا جاسکے۔ کابینہ نے واضح کیا کہ کسی اور وائس چانسلر کو یونیورسٹی ھزا کا اضافی چارج دینا خلاف ایکٹ تصور ھوگی جس سے اجتناب کیا جائے۔بیوٹا نے حکام اعلی سے مستقل وائس چانسلر کی تعیناتی کے عمل کو تیز کرنے کی اپیل کی تاکہ یونیورسٹی میں گذشتہ تین سال سے جاری تدریسی اور انتظامی بحراں پر قابو پایا جاسکے۔بیوٹا کابینہ نے حکومت سے متفقہ مطالبہ کیا کہ باچاخان یونیورسٹی چارسدہ کے لیے نیک، تجربہ کار، غیرجانبدار، باکردار اورمقامی مستقل وائس چانسلرکو تعینات کیا جائے جو یہاں کے ثقافت سے واقفیت رکھتا ہو اور اپنے اپکو اسانی سے ایڈجسٹ کرسکے۔بیوٹا نے مطالبہ کیا کہ تقرری سے قبل تمام امیدواروں کے پچھلے چھ سال کی سروس ھسٹری کی اچھی طرح جانچ پڈتال کی جائے تاکہ پاک صاف، غیر متنا زغہ، اور عدم سزا یافتہ لوگوں کا انتخاب کیا جا سکے جو وقت کا اھم تقاضا ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -