بھارت کو پھر آئی سی سی سے اپنے خلاف سازش کی بو آنے لگی، بوکھلاہٹ میں اپنے ہی چیئرمین پر الزام لگا دیا

بھارت کو پھر آئی سی سی سے اپنے خلاف سازش کی بو آنے لگی، بوکھلاہٹ میں اپنے ہی ...
بھارت کو پھر آئی سی سی سے اپنے خلاف سازش کی بو آنے لگی، بوکھلاہٹ میں اپنے ہی چیئرمین پر الزام لگا دیا

  

ممبئی (ڈیلی پاکستان آن لائن) بورڈ آف کنٹرول فار کرکٹ ان انڈیا (بی سی سی آئی) کو ایک مرتبہ پھر انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) میں اپنے خلاف سازش کی بو آنے لگی ہے اور بوکھلاہٹ میں اپنے ہی چیئرمین پر الزام بھی عائد کر دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق بی سی سی آئی نے رواں برس آسٹریلیا میں شیڈول ٹی 20 ورلڈ کپ کے فیصلے میں تاخیر کا ذمہ دار چیئرمین ششانک منوہر کو قرار دیدیا ہے اور یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ وہ اس سے قبل ششانک منوہر کی مدت ملازمت میں توسیع کی مخالفت کر کے نئے انتخابات کا مطالبہ بھی کر چکا ہے۔

بی سی سی آئی آفیشل کا کہنا ہے کہ جب میزبان آسٹریلیا ہی ایونٹ کیلئے تیار نہیں تو پھر کنفیوژن کیوں پھیلائی جا رہی ہے، جان بوجھ کر معاملے کو تاخیر کا شکار کردیا گیا ہے۔ دلچسپ امر یہ ہے کہ اس سے قبل کچھ ادائیگیوں کے معاملے میں آئی سی سی نے بی سی سی آئی کو سخت الفاظ پر مشتمل خط لکھا جس میں کہا گیا کہ اگر بھارت نے معاملات کو حل نہ کیا تو اس سے آئی سی سی ایونٹس کی میزبانی چھین لی جائے گی اور اس کا الزام بھی انہوں نے ششانک منوہر پر ہی عائد کیا تھا۔

مزید :

کھیل -