افغانستان میں ایکشن کیلئے پاکستان کی زمین کے استعمال کے مطالبے پر وزیر اعظم نے اہم اعلان کر دیا

افغانستان میں ایکشن کیلئے پاکستان کی زمین کے استعمال کے مطالبے پر وزیر اعظم ...
افغانستان میں ایکشن کیلئے پاکستان کی زمین کے استعمال کے مطالبے پر وزیر اعظم نے اہم اعلان کر دیا

  

اسلام آباد ( ڈیلی پاکستان آن لائن ) امریکا کی جانب سے افغانستان کے خلاف کارروائی کیلئے اڈوں کے مبینہ مطالبے پر وزیر اعظم عمران خان نے پاکستانی موقف واضح طور پر پیش کر دیا۔

اپنے بیان میں وزیر اعظم نے امریکا کو افغانستان میں کارروائی کیلئے اڈے دینے سے صاف انکار کر دیا ، وزیر اعظم نے کہا کہ یہ ممکن ہی نہیں کہ ہم امریکا کو اڈے دیں ، افغانستان میں ایکشن کیلئے پاکستان کی زمین استعمال کرنے کی اجازت نہیں دیں گے ۔

اس سے قبل رواں ماہ امریکی خبر رساں ادارے وائس آف امریکہ نے بھی وزیر اعظم پاکستان کے صاف انکار سے متعلق خبر شائع کی تھی۔ وائس آف امریکہ کے مطابق پاکستان نے امریکہ کو باضابطہ طور پر آگاہ کردیا  کہ وہ افغانستان سے غیر ملکی افواج کے انخلا کے بعد دہشت گردی کے خلاف کارروائیوں کیلئے امریکہ کو فوجی اڈے فراہم نہیں کرے گا۔

اس سے قبل یہ خبریں زیر گردش تھیں کہ پاکستان نے امریکہ کو خطے میں موجودگی برقرار رکھنے کیلئے فوجی اڈے فراہم کردیے۔ چینی اخبار ساؤتھ چائنہ مارننگ پوسٹ نے دعویٰ کیا تھا کہ پاکستان نے امریکہ کو شمسی ایئر بیس دوبارہ دے دی ہے۔ اس سے قبل مشرف دور میں یہ ایئر بیس امریکہ کے پاس تھی تاہم سلالہ چیک پوسٹ پر حملے کے بعد 2011 میں پاکستان نے یہ ایئر بیس امریکہ سے واپس لے لی تھی۔

وائس آف امریکہ نے پاکستانی عہدیداروں کے حوالے سے دعویٰ کیا ہے کہ پاکستان اور امریکہ کے درمیان فوجی اڈوں کی فراہمی کیلئے رابطے ہوئے ہیں تاہم اسلام آباد نے واضح کیا ہے کہ اس کیلئے واشنگٹن کو فوجی اڈے فراہم کرنا ممکن نہیں ہے۔

پاکستان کی جانب سے واضح جواب دیے جانے کے بعد دونوں ملکوں کے درمیان باہمی رابطوں کے دوران امریکی عہدیداروں کی جانب سے اڈوں کی فراہمی کا موضوع زیر بحث نہیں لایا جا رہا۔

مزید :

اہم خبریں -