قومی اسمبلی میں کتابیں ماری گئیں، پرویز خٹک نے طاقت کے مطابق کاغذ اٹھا کے مارے ، عبدالقادر پٹیل 

قومی اسمبلی میں کتابیں ماری گئیں، پرویز خٹک نے طاقت کے مطابق کاغذ اٹھا کے ...
قومی اسمبلی میں کتابیں ماری گئیں، پرویز خٹک نے طاقت کے مطابق کاغذ اٹھا کے مارے ، عبدالقادر پٹیل 

  

اسلام آباد ( ڈیلی پاکستان آن لائن) قومی اسمبلی کے اجلاس میں اظہار خیال کرتے ہوئے پاکستان پیپلزپارٹی کے رہنما عبدالقادر پٹیل نے کہا کہ قومی اسمبلی کے اجلاس میں جو ہوا وہ نہیںہونا چاہئے تھا ، قومی اسمبلی کے اجلاس میں وزرا نے اپوزیشن کو بجٹ کی کتابیں ماریں ، پرویز خٹک نے اپنی طاقت کے مطابق کاغذ اٹھا اٹھا کر مارے ۔

عبدالقادر پٹیل نے کہا کہ وزیر دفاع کے پھینکے ہوئے کاغذات میزائل کی طرح اپوزیشن کی طرف گئے ، اگر وہ نشانے پر لگ جاتے تو پانچ چھ ارکان لڑھک جاتے ، وزیر خارجہ اس دن ہنگامہ آرائی کی قیادت کرتے رہے ۔ اس دن ایسے وزرا ءبھی کتابیں اچھالتے نظر آئے جن سے توقع نہ تھی ۔

عبدالقادر پٹیل نے کہا کہ دو کروڑ لوگ غربت کی سبح سے نیچے آئے ہیں ، قومی اسمبلی میں گزشتہ روز کی بلاول بھٹو کی تقریر سینسر کرائی گئی، بجٹ کی وہ کتب جو ایک دوسرے کو مارنے کے کام آتی ہیں وہ بیکار ہیں ۔

اجلاس میں علی محمد خان نے سابق سینیٹر عثمان خان کاکڑ کی صحت یابی کیلئے دعا بھی کرائی۔ 

مزید :

قومی -الیکشن -قومی اسمبلی -